تازہ ترین

اسلام آباد ،سمیت ملک کے مختلف شہروں میں زلزلے کے شدید جھٹکے

Earth Quake

اسلام آباد(یوپی آئی) وفاقی دارالحکومت اسلام آباد سمیت ملک کے مختلف شہروں میں زلزلے کے شدید جھٹکے محسوس کئے گئے، پشاور، صوابی اور بنون کے سکولوں میں بھگڈر مچنے سے 45بچے زخمی ہوئے، لوگوں میں شدید خوف ہراس پھیل گیا، ریکٹر سکیل پر زلزلے کی شدت 6.4ریکارڈ کی گئی ایک دن میں دوسری بار زلزلہ آیا جبکہ زلزلے کے باعث سینیٹ کارروائی 10منٹ کے لئے ملتوی کر دی، اراکین قلمہ طیبہ کا ورد کرتے رہے، تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز پشاور، اسلام آباد، لاہور، فیصل آباد، چترال، سیالکوٹ، ایبٹ آباد، مالا کنڈ، سرگودھا، قصور، اوکاڑہ، میانوالی، کوٹلی، وادی نیلم، چارسدہ، ہنگو، شانگلہ، کوہاٹ، پاراچنار، میران شاہ، مانسہرہ، واہ کینٹ سمیت ملک کے مختلف شہروں میں زلزلے کے شدید جھٹکے محسوس کئے گئے، جس کے بعد لوگ گھروں اور دفاتر سے کلمہ طیبہ کا ورد کرتے ہوئے باہر نکلے،محکمہ موسمیات کے مطابق زلزلے کی شدت ریکٹر سکیل پر 6.4ریکارڈ کی گئی جبکہ زلزلے کا مرکز افغانستان، تاجکستان سرحد پر کوہ نیروکش کا پہاڑی سلسلہ تھا، محکمہ موسمیات کے مطابق زلزلہ 3جبکر 40منٹ پر آیا جس کی گہرائی 97کلو میٹر زیر زمین تھی، زللزے کی وجہ سے سینیٹ کی کارروائی 10منٹ کےلئے ملتوی کر دی گئی، اور اراکین اسمبلی باہر نکل کلمہ طیبہ کا ورد کرتے رہے، ملک کے چھوٹے بڑے شہروں میں ایک ہی روز دوسری دفعہ آنے والے زلزلے کے بعد گھروں اور دفاتر سے باہر نکلے اور خوف و ہراس میں مبتلا ہوئے اور کچھ دیر تک آفٹر شاکس کا انتظار کرتے رہے، واضح رہے کہ میڈیا رپورٹس کے مطابق زلزلہ کے جھٹکے پاکستان سمیت افغانستان، بھارت اور مقبوضہ کشمیر میں بھی محسوس کئے گئے تاہم نقصان کی اطلاع نہیں ملی، اس سے قبل صبح8بجکر 27منٹ پر خیبرپختونخواہ سمیت ملک کے مختلف حصوں میں5.5شدت زلزلے کے جھٹکے محسوس کئے گئے، جس کا دورانیہ 4سے5سیکنڈ رہا، بنون، پشاور اور صوابی کے سکولوں میں بھگڈر مچنے سے 45بچے زخمی ہوئے، جنہیں ابتدائی طبی امداد کے لئے صوابی سول ہسپتال، پشاور لیڈی ریڈنگ ہسپتال منتقل کر دیا گیا، جبکہ بنون میں گورنمنٹ مڈل سکول ٹانچی میں معمول زخمی ہونے والے بچوں کو ڈسٹرکٹ ہیڈکواٹر ہسپتال بنون منتقل کر دیا گیا، زلزلہ پیما مرکز کے مطابق وفاقی دارالحکومت سمیت خیبرپختونخوا اور پنجاب میں ریکٹر سکیل پر زلزلے کی شدت 5.5ریکارڈ کی گئی جس کا مرکز بنون سے 20کلو میٹر شمال میں تھا جبکہ گہرائی 12کلو میٹر زیر زمین تھی۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*