تازہ ترین

آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس ‘نیب نے سید خورشید شاہ کو گرفتار کر لیا

راولپنڈی(آئی این پی ) قومی احتساب بیورو (نیب) نے آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس میں سوالنامہ کے تسلی بخش جو اب نہ دینے پر پیپلز پارٹی کے مرکزی رہنما و قومی اسمبلی میں سابق اپوزیشن لیڈر سید خورشید شاہ کو گرفتار کر لیا۔ تفصیلات کے مطابق بدھ کو قومی احتساب بیورو (نیب) راولپنڈی اور سکھر نے پاکستان پیپلزپارٹی (پی پی پی) کے سینئر رہنما خورشید شاہ کو گرفتار کرلیا۔نیب ذرائع کے مطابق نیب کی مشترکہ ٹیم نے آمدن سے زائد اثاثے سے متعلق کیس میں خورشید شاہ کو گرفتار کیا گیا۔ذرائع نے بتایا کہ پی پی رہنما کے خلاف 3 تحقیقات چل رہی ہیں اور ان کے خلاف تمام الزامات ٹھوس تھے، جس کی بنیاد پر انہیں گرفتار کیا گیا۔نیب ذرائع کا کہنا تھا کہ خورشید شاہ کو نیب تحقیقات کے سلسلے میں سوالنامہ بھی بھجوایا گیا تھا، جس کے وہ تسلی بخش جواب نہیں دے سکے تھے۔پیپلز پارٹی کے سنٹرل پنجاب کے صدر قمر زمان کائرہ کا کہنا ہے کہ خورشید شاہ کی گرفتاری کی مذمت کرتے ہیں وہ تمام جائیدادیں جن کا ان پر الزام ہے وہ ان کے رشتہ داروں کے نام ہیں اور اس کے واضح ثبوت موجود ہیں جبکہ ان کے رشتہ دار اس پر باقاعدہ ٹیکس بھی دیتے ہیں ۔ نیب کی جانب سے وہ جائیدادیں خورشید شاہ کے نام ظاہر کر کے ان پر الزامات لگائے گئے جس پر ا ن کی گرفتاری عمل میں لائی گئی ہے جس کی ہم مذمت کرتے ہیں ۔ دوسری جانب نیب کا کہنا ہے کہ نیب سکھر نے اسلام آباد میں پیپلز پارٹی کے سینئر رہنما خورشید شاہ کو بنی گالا رہائش گاہ سے گرفتار کرلیا، نیب کے مطابق خورشید شاہ کے خلاف آمدن سے زائد اثاثہ جات کی تحقیقات کا آغاز 7اگست سے ہوا تھا۔ خورشید شاہ کے بینک اکاﺅنٹ اور بے نامی جائیدادوں کی تفصیلات کے مطابق انہوں نے اعجاز کے نام سے سکھر، روہڑی میں دو جائیدادیں بنائیں، لڈومل کے نام پر 11جائیدادیں بنائیں، آفتاب حسین سومرو کے نام پر دس جائیدادیں بھی بنا رکھی ہیں، نیب راولپنڈی اور سکھر نے مشترکہ کاروائی کرتے ہوئے خورشید شاہ کو گرفتار کیا ہے۔ نیب کے مطابق ابتدائی تحقیقات میں تمام الزامات ثابت ہوئے اور اب مزید تفتیش کی جائے گی، جس کےلئے خورشید شاہ کو راہداری ریمانڈ لے کر سکھر منتقل کیا جائے گا جبکہ خورشید شاہ نے کوآپریٹو سوسائٹی میں بنگلے کیلئے امینٹی پلاٹ فرنٹ مین کے ذریعے خریدے‘ہوٹل، پٹرول پمپ، بنگلے،فرنٹ مین اور بے نامی جائیدادوں کے نام پر بنائے ہیں ۔ دوسری جانب نیب ذرائع کا کہنا ہے کہ خورشید شاہ کی بے نامی جائیدادوں میں عمر جان نامی شخص کا اہم کردار ہے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*