تازہ ترین

سینیٹ الیکشن میں ایک آدمی کی وفاداری خرید نے کی قیمت ستر کروڑ لگ گئی، محمود خان اچکزئی

Mehmood_Khan_Achakzai

کوئٹہ(سٹاف رپورٹر)پشتونخواملی عوامی پارٹی کے سربراہ محمود خان اچکزئی نے کہا ہے کہ سینٹ الیکشن میں ایک آدمی کی وفاداری خریدنے کی قیمت ستر کروڑ لگ گئی ہے اتنی رقم سے تو چار اضلاع کے لوگوں کی افلاس ختم ہوسکتی ہے ایک سینٹر کیلئے چھ ارب درکار ہے ضمیر فروشی نہ کرنے والوں کو غدار کہا جاتا ہے اس عمل پر لعنت بھیجتا ہوں جس انداز میں ملک میں تماشے ہورہے ہیں نیب اور دوسرے ادارے کہاں ہیں اگر کسی کو میں پسند نہیں تو بتادیں لیکن ملک کو تباہ نہ کرے سیاسی لوگوں کا پیچھا کرنے سے مسائل حل نہ ہونگے جب تک ملک مےں آئےن و قانون کی حکمرانی قائم نہےں ہو گی اس وقت ملک بحرانوں سے نکل نہےں سکتا اکیس فروری کا دن مادری زبانوں کے حوالے سے اہم ہے اردو کو قومی زبان کو درجہ ملنے پر بنگالی زبان کو نظرانداز کیا گیابنگالی طالب علموں کے احتجاج پر گولیاں چلنے کے بعد اقوام متحدہ نے اس دن کا منانے کا اعلان کیا پاکستان میں روز اول سے ہی سیاسی لوگوں کو آگے آنے نہیں دیا گیا ملک کو افراتفری سے بچانے کیلئے عمران خان مستعفی ہوکر ڈائیلاگ کا آغاز کریں کارکن اسلام آباد دھرنے کیلئے کمر کس لیں ملک پر قابض حکمرانوں نے مادری زبانوں کی ترقی کی ہمےشہ مخالفت کی‘ ان خےالات کا اظہار انہوں نے کوئٹہ میڑو پولیٹن کارپوریشن میں مادری زبانوں کے عالمی دن کے موقع پر جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کےا‘ محمود خان اچکزئی نے کہاکہ اکیس فروری کا دن مادری زبانوں کے حوالے سے اہم ہے اردو کو قومی زبان کو درجہ ملنے پر بنگالی زبان کو نظرانداز کیا گیابنگالی طالب علموں کے احتجاج پر گولیاں چلنے کے بعد اقوام متحدہ نے اس دن کا منانے کا اعلان کیا پاکستان میں روز اول سے ہی سیاسی لوگوں کو آگے آنے نہیں دیا گیا ملک کی بدقسمتی رہی کہ تمام اداروں کے سربراہان بڑے صوبے سے تھے اردو صرف اڑھائی فیصد لوگوں کی زبان تھی مخصوص لوگوں نے اپنے مفاد کیلئے اردو کی ترویج کی حکمرانوں سے دانش ور التجا کررہے ہیں کہ کسی پر زبردستی مسلط نہ کرے اللہ تعالی اپنی شان خود یہ بیان کرتے ہیں تمام انسانوں کو الگ الگ زبان دی اللہ تعالی نے ہر زبان اور قوم کیلئے پیغمبر بھیجے پاکستان کثیرالقومی ملک یے ملک پر قابض حکمرانوں نے مادری زبانوں کی ترقی کی ہمےشہ مخالفت کی مادری زبانوں میں بولنے کا حق کوئی کسی سے چھین نہیں سکتا پاکستان کو پرامن طور پر چلانے کے خواہاں ہیں ہر قوم کو انکے وسائل پر حق دینا ہوگا ہم سب کو متحد ہوکر مادری زبانوں کا تحفظ کرنا ہوگا ملک میں اس وقت افراتفری اور بدامنی کا ماحول ہے لیکن حکمرانوں کو سینٹ الیکشن سے ہی مصروفیت نہیں انہوں نے کہاکہ وزیرستان اور دیگر قبائلی علاقوں کے لوگ ایک دوسرے سے الجھنے سے پرہیز کرنا ہوگا کوئٹہ میں مسلح افراددھندناتے پھرتے ہیں لیکن شہریوں کا کوئی پرسان حال نہیں حکمرانوں کو پرامن پاکستان کے قیام کیلئے ہر ایک کو اس کا جائز حق دینا ہوگا پشتون خواہ ملی عوامی پارٹی مطالبہ کرتی ہے کی ابتدائی تعلیم مادری زبان میں دی جائے ہم سب کو پشتو سمیت مادری زبانوں کی ترویج کو عام کرنا ہوگا مادری زبانوں کی ترویج اور اشاعت سے تعلیم اور تحقیق کی نئی راہیں کھلیں گی مادری زبانیں سمجھ بوجھ کی سیڑھی ہوتی ہے ہر قوم کی زبان کا احترام سیاسی شعور رکھنے والوں کا فریضہ ہے انہوں نے کہاکہ پشین کے ضمنی الیکشن میں اپنے اتحادی جے یو آئی کو کامیاب کرانے پر پشتنون خواہ میپ کے کارکنوں کو خراج تحسین پیش کرتاہوں پی ڈی ایم کی تحریک کسی نے شوق سے شروع نہیں کی بلکہ آئین اور پارلیمنٹ کی بالادستی کیلئے شروع کی گئی ملک کی آزادی سب کو پیاری یے اورملک کو بچانے کا واحد راستہ آئین کے تحت پارلیمنٹ کو بالادست کرنے سے ہوگاملک کو بچانے آئین اور قانون کی بالادستی یقینی بنانا ہوگی ناانصافیوں کی بدولت ملک پہلے دولخت ہوچکا ہے ملک بچانے کیلئے ووٹ کو عزت دینا ہوگی محمود خان اچکزئی نے کہاکہ پی ڈی ایم درخواست کرتی ہے کہ ملک کو بچانے کیلئے ہر قوم کو اس کا آئینی حق دیا جائے اس وقت بلوچ مائیں لاپتہ افراد کی بازیابی کیلئے اسلام آباد میں بیٹھتی ہیں لیکن انکی آواز سنے والا کوئی نہیں فاٹا کو صوبے میں ضم کرنے سے کشمیر ہاتھ سے نکل گیا ہے ملک کو بچانے کیلئے طاقت کا سرچشمہ پارلیمنٹ ہونا چاہئے مہنگائی آسمان سے باتیں کررہی ہے انسان سب کچھ برداشت کرسکتا ہے لیکن بچوں کی بھوک برداشت نہیں کرسکتا انہوں نے کہاکہ سینٹ الیکشن میں ایک آدمی کی وفاداری خریدنے کی قیمت ستر کروڑ لگ گئی ہے اتنی رقم سے تو چار اضلاع کے لوگوں کی افلاس ختم ہوسکتی ہے ایک سینٹر کیلئے چھ ارب درکار ہے ضمیر فروشی نہ کرنے والوں کو غدار کہا جاتا ہے اس عمل پر لعنت بھیجتا ہوں جس انداز میں ملک میں تماشے ہورہے ہیں نیب اور دوسرے ادارے کہاں ہیں اگر کسی کو میں پسند نہیں تو بتادیں لیکن ملک کو تباہ نہ کرے سیاسی لوگوں کا پیچھا کرنے سے مسائل حل نہ ہونگے حکمرانوں سے درخواست کرتے ہیں کہ دوتانی اور وزیر قبائل میں خون ریزی کو رکوائے اپنی زندگی اپنے وطن سے زیادہ عزیر نہیں عمران خان کو ملک عزیر ہے تو مستعفی ہوکر ڈائیلاگ کرے سیاسی کارکن اسلام آباد دھرنے کیلئے کمر کس لیں۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*