تازہ ترین

حکومت آئی ایم ایف ،سے ممکنہ بات چیت کو،تمام اسٹیک ہولڈرزکے سامنے رکھے

اسلام آباد/کراچی( کامرس ڈیسک)پاکستان کارپٹ مینو فیکچررزاینڈ ایکسپورٹرزایسوسی ایشن کے سینئر وائس چیئرمین ریاض احمد نے کہا ہے کہ حکومت آئی ایم ایف سے ہونے والی ممکنہ بات چیت کوتمام اسٹیک ہولڈرزکے سامنے رکھے ، مختلف شعبوں کےلئے ٹیکسز میں چھوٹ ختم کرنے اور700ارب روپے کے ٹیکسز کے نفاذ کی شرائط کی اطلاعات سے طبقے میں شدید تشویش پائی جاتی ہے ۔ اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ موجودہ حالات میں اگر کسی شعبے کو دیا گیا ریلیف ختم کیا جاتا ہے تو اس سے مشکلات مزید بڑھ جائیں گی ۔ حکومت کوچاہیے کہ اس سارے عمل میں اسٹیک ہولڈرز کو نظر انداز کرنے کی بجائے ان سے مشاورت کوفروغ دے تاکہ بہتر پالیسیوں سے مشکلات سے نمٹا جا سکے ۔ ماضی میں بھی سولو فلائٹ پالیسیاں بنائی گئیں جن کے معیشت کے لئے نتائج برآمد ہوئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ حکومت آگاہ کرے کہ آئی ایم ایف سے کن شرائط پر بات ہو رہی ہے اور کن شعبے پر مزید بوجھ ڈالنے کی تیاریاں کی جارہی ہیں ۔تجویز ہے کہ حکومت آئی ایم ایف سے بات چیت اورآئندہ بجٹ کے حوالے سے اسٹیک ہولڈرز کو اعتماد میں لے تاکہ تمام شعبوںپیشگی اپنی تیاری کر سکیں ۔ ریاض احمد نے کہا کہ ٹیکسز دینے والے تمام شعبوںسے مشاورت اور انہیں اعتماد میں لینے کو پالیسی کے طو رپر بنایا جائے ۔پاکستان کارپٹ مینو فیکچررزاینڈ ایکسپورٹرزایسوسی ایشن کے سینئر وائس چیئرمین ریاض احمد نے کہا ہے کہ حکومت آئی ایم ایف سے ہونے والی ممکنہ بات چیت کوتمام اسٹیک ہولڈرزکے سامنے رکھے ، مختلف شعبوں کےلئے ٹیکسز میں چھوٹ ختم کرنے اور700ارب روپے کے ٹیکسز کے نفاذ کی شرائط کی اطلاعات سے طبقے میں شدید تشویش پائی جاتی ہے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*