وزیر اعظم کا وزر اءکی کا ر کر د گی پر عدم اطمینا ن

گذشتہ رو ز وفا قی کا بینہ کا اجلا س وزیر اعظم عمر ان خان کی زیر صد ارت ہو ا جس میں انہو ں نے وزر اءکی کا کر د گی پر عدم اطمینا ن کا اظہا کر تے ہوئے وزر اءکو ہد ایت دی کہ وہ اپنی کا رکر د گی اور وزارتو ں پر
گر فت بہتر بنائیں شہر یو ں کے مسائل سے جڑی وزارتو ں کے پا س غلطی کی گنجا ئش نہیں ہونی چا ہیئے اسا مہ ستی کے وا لد ین حکومتی کا رو ائی سے مطمئن نہیں تو
ہا ئیکو رٹ کے جج سے تحقیقا ت کر ائیں انہو ں نے ایک با ر پھر اس عزم کا اظہا ر کیا کہ سا نحہ مچھ کے ذمہ دا رو ں کو کیفر کر دا ر تک پہنچا ئیں گے۔
وزیر اعظم عمر ان خان کا وفا قی وزرا ءکی کا رکر د گی پر اظہا رعدم اطمینا ن بلا شبہ حکومتی کا رکر د گی پر ایک بہت بڑ اسو الیہ نشا ن اور افسو س نا ک با ت ہے ایسا نہیں ہونا چا ہیئے جب وزرا ءکی کا کر د گی اچھی نہیں ہو گی تو حکومت کیسے چلے گی۔
اس میں کوئی شک نہیں کہ وفا قی وزر اءکی
کا ر کر د گی ٹھیک نہیں ہے ملک میں کوئی بھی محکمہ صحیح
طر یقے سے نہیں چل رہا جن میں ریلو ے کا محکمہ جو مسلسل خسا رے میں چل رہا ہے اس کے پہلے وفا قی وزیر شیخ رشید احمد اس کو منا فع بخش بنانے کے دعو ے کرتے رہے مگر وہ اس میں کامیا ب نہیں ہو سکے ان کے دور میں ٹر ینو ں کے بڑ ے بڑے حا دثا ت بھی ہوئے مگر اس سلسلے میں کسی قسم کی بھی کوئی کا رو ائی نہ
ہو سکی اب ریلو ے کی وزارت اعظم خان سو اتی نے سنبھا لی ہے انہو ں نے وزا رت سنبھا لتے ہی وا ضح کر دیا کہ محکمہ اس طرح خسا رے میں ہے کہ شا ید اس کو بند کرنا پڑ جا ئے اس کو نا اہلی کا نا م نہ دیں تو اور کیا کہ محکمے کو جو ایک اچھا خا صا منا فع بخش رہا ہے کو ٹھیک کرنے کی بجا ئے اس کو بند کرنے کی با ت کر رہے ہیں جو کہ بڑے افسو سنا ک با ت ہے وزارت پا نی وبجلی کا یہ عالم ہے کہ ملک میں مسلسل لو ڈ شیڈنگ جا ری ہے اس کے سا تھ
سا تھ سسٹم کی کوئی مینٹنس نہیں ہو رہی وہی پر انا سسٹم کا م کررہا ہے جو اب اتنا پر انا ہو گیا ہے کہ وہ مز ید بو جھ
بر داشت نہیں کر سکتا جس کے با عث آئے رو ز اس میں خر ابیاں آ تی رہتی ہیں ابھی حا ل ہی میں ایک بہت بڑ ا بر یک ڈاﺅن ہو ا جس نے پو رے ملک کو اند ھیر ے میں دھکیل دیا لیکن اس کے وزیر عمر ایو ب خان نے اس کو محض ایک انسا ن کی غلطی کر با ت ختم کر دی بجلی کے
بلو ں کا یہ عا لم ہے کہ اس میں بجلی کی قیمت سے زیا دہ اس پر ٹیکسز ہو تے ہیں جس سے بل کئی گنا بڑ ھ جا تا ہے چو نکہ بجلی دیگر ذر ائع سے پید ا کی جا تی ہے جو کہ بڑی مہنگی پڑ تی ہے حا لا نکہ کوئلے سے بجلی بنا نے کے
طر یقے مو جو د ہیں جو سستے پڑ تے ہیں مگر اس پر عمل نہیں کیا جا رہا اس پر بھی سیا ست ہورہی ہے یہی عا لم گیس کا بھی ہے جس کی لو ڈ شیڈ نگ اور پر یشر میں کمی جیسے مسائل پر قا بو نہیں پا یا جا رہا حا لا نکہ گیس صا ر فین کو بھی بھا ری بھر کم بل بھیجے جا تے ہیں ان میں بھی جر مانے اور ٹیکسو ں کی بھر ما ر ہوتی ہے اس طرح پی آئی اے
انٹر نیشنل ائیر لا ئنز ہے بھی مسلسل خسا رے میں چل رہا ہے حا لا نکہ اس کے ٹکٹ بھی اچھے خا صے مہنگے ہیں جبکہ اکثر جہا زو ں کی حا لت بھی ٹھیک نہیں ہے اس کے علا وہ دیگر اہم وزارتو ں کی کا رکر دگی بھی عو ام کے سا منے
عیا ں ہے ملک میں مہنگائی میں کئی گنا اضا فہ بھی متعلقہ وزا رتو ں کی نا اہلی ظا ہر کر رہی ہے اس سے عوام سخت پر یشا نی میںمبتلا ہیں ۔
یہ تما م صو رتحال موجو دہ حکومت کے وزرا ءکے حق میں نہیں ہے جو کہ ایک بہت بڑ ا المیہ ہے اس لیے یہا ں ضرورت اس امر کی ہے کہ اب بھی وقت ہے کہ وفا قی وزر اءاپنی وز ا رتو ں کو صحیح طر یقے سے چلا ئیں اگر وہ اس میں نا کام ہو تے ہیں تو یہ ان کی سیا سی مو ت ہو سکتی ہے اس لیے ان کو اس کے لیے احسن اقد اما ت کرنے چاہئیں۔
اس کے سا تھ وزیر اعظم عمر ان خان کو ایسے وزر اءکے سا تھ کوئی کمپر و ما ئز نہیں کرنا چا ہیئے بلکہ ان کی نا قص کا رکر د گی پر ان کے خلا ف کا رو ائی کرنی چا ہیئے
کیو نکہ ایسا ہی کرنا ان کے مفا د میں ہے اگروہ ایسا کرنے میں کامیا ب نہیں ہو تے تو یہ ان کی حکومت کے لیے اچھا شگون نہیں ہو گا اس لیے ان کو اس میں اصلا حا ت لا نی چا ہئیں۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*