کسی صنعت کو گیس کی سپلائی بند نہیں کی گئی،سوئی سدرن گیس کمپنی

کراچی(کامرس ڈیسک)سوئی سدرن گیس کمپنی (ایس ایس جی سی)کے ڈپٹی منیجنگ ڈائریکٹرسعیداحمدلاڑک اور ترجمان شہبازاسلام نے کہا ہے کہ کسی صنعت کو گیس کی سپلائی بند نہیں کی گئی، صرف کیپٹو پاور کو گیس سپلائی بند کی گئی ہے،سندھ میں گیس بحران شدت اختیار کر گیاہے، ایس ایس جی سی کو 250 ایم ایم سی ایف ڈی کی کمی کاسامنا ہے اوراس حوالے سے وفاقی حکومت کو آگاہ کردیا گیا ہے۔پیر کو سوئی سدرن کے مرکزی دفتر میں میڈیا بریفنگ میں سعید لاڑک نے کہا کہ سوئی سدرن نظام میں گیس ضیاع کم ہوا ہے، کئی برس سے قدرتی گیس کی پیداوار میں کمی کاسامنا ہے، رواں برس سردی زیادہ ہونے سے صورت حال مزیدخراب ہوگئی،کوویڈ کے باوجود ہم نے 5.1بلین کیوبک فٹ گیس ضیاع کم کیا ہے، گیس کے ذخائر کم ہو رہے ہیں جس کا ایک حل ایل این جی ہے، بجلی گھروں اور ایکسپورٹ صنعت کو گیس دے رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ گمبٹ سے جلد 20 ایم ایم سی ایف ڈی گیس آئے گی، اس کے علاوہ عائشہ گیس فیلڈ سے بھی گیس سسٹم میں آگئی ہے۔ڈی ایم ڈی سوئی سدرن نے کہا کہ لیاری کے لیے پانچ کلومیٹر کی پائپ لائن کا منصوبہ بنا لیا ہے۔ ڈپٹی منیجنگ ڈائریکٹر نے کہا کہ گیس سپلائی کی کمی کے پیش نظر کیپٹو پاورز کو 50فیصد کٹوتی کی درخواست کی مگر صنعتکاروں نے تعاون نہیں کیا مجبورانان ایکسپورٹرز صنعتوں کے علاوہ انڈسٹریز اور کیپٹو پاورز کو گیس بند کی گئی، ہمیں متبادل انرجی پر جانا پڑے گا، انڈسٹریز تعاون کریں کیونکہ گھریلوصارفین کو گیس کی فراہمی ہماری اولین ترجیح ہے۔انہوں نے بتایا کہ ہمارے 4ہزارصنعتی صارفین ہیں،سندھ اوربلوچستان میں صارفین کی تعداد24ہزارہے ،ہم پابندہیں جو گیس فیلڈہمیں ایلوکیٹ ہوتی ہے وہاں سے ہم گیس لیتے ہیں اورپھرصارفین کودیتے ہیں،مسلسل گیس میں کمی واقع ہورہی ہے،پچھلے سال 250شارٹ فال تھا،ہرسال 50فیصد طلب بڑھ جاتی ہے،اس سال 150ملین گیس کی سپلائی مختلف گیس فیلڈزسے کم ہورہی ہیں،2گیس فیلڈسے 100ایم ایم سی ایف ڈی گیس کم مل رہی ہے اور اس بارے میںہم نے حکومت کوآگاہ کردیاہے۔انکا کہنا تھا کہ حکومت نے گیس کی تقسیم کاخاکہ پیش کیاہے اورگھریلوصارفین کوگیس کی فراہمی اولین ترجیح پرفراہم کی جائے گی،دوسراسیکٹر سی این جی اورتیسراسیکٹر کیپٹو پاور ہے،کراچی میں درجہ حرارت سنگل ہندسوں پرہے جبکہ کوئٹہ اورقلات کاموسم منفی پرہے،بلوچستان میں تین فیصد گیس کی طلب بڑھ جاتی ہے،210ایم ایم سی ایف ڈی گیس صرف کوئٹہ اوردیگرعلاقوں کوگیس فراہم کررہے ہیں ۔ ترجمان سوئی سدرن شہباز اسلام نے کہا کہ گھریلو اور صنعتی صارفین کی شکایات آرہی ہیں،سوئی سدرن گیس کمپنی کا بنیادی کام لوگوں تک گیس کی ترسیل کرنا ہے،ہماری ٹرانسمیشن لائن 4500 ہزار کلومیٹر سے زیادہ ہے،ہمارے ساتھ 3.1 ملین گھریلو اور 4 ہزار سے زائد صنعتی صارفین جڑے ہیں۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*