سیب

طبی تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ دماغی کمزوری اور زکام میں سیب کا استعمال مفید ہوتا ہے۔آج کل دماغی کمزوری کے مریض عام ہیں اور وہ زیادہ تر نزلہ زکام میں بھی مبتلا نظر آتے ہیں۔طالب علموں کو امتحانات کے دنوں میں اکثر نزلہ زکام کی شکایت ہوجاتی ہے۔ادویات سے اس لئے آرام نہیں آتا کہ نزلے کی اصل وجہ دماغی کمزوری ہوتی ہے۔اگر دماغی کمزوری کا سدباب کر لیا جائے تو نزلہ زکام خود ہی ٹھیک ہو سکتا ہے۔
یہاں ایسا غذائی نسخہ دیا جا رہا ہے جو دماغی کمزوری میں مفید ہے۔کھانا کھانے سے دس منٹ پہلے ایک یا دو سیب اچھی کوالٹی کے چھیل کر کھا لیا کریں۔چند روز میں دماغی کمزوری کی شکایت دور ہو جائے گی۔اس کے علاوہ بھی سیب کئی امراض میں مفید بتایا جاتا ہے۔
کھانسی کا علاج۔ایک پکا ہوا سیب کوٹ لیں۔
کوٹے ہوئے سیب کا رس نکال کر اس میں مصری ملائیں اور صبح ناشتے سے پہلے مریض کو پلائیں۔
قے کا علاج۔کچے سیب کا جوس نکال لیں۔اس میں تھوڑا نمک ملا کر پلائیں۔قے میں آرام آجا تا ہے۔
پیٹ کے کیڑے۔رات کے وقت بچوں کو دو سیب کھلائیں۔اس کے بعد پانی بالکل نہ پلائیں۔چند روز ایسا کرنے سے پیٹ کے کیڑے رفع حاجت کے راستے نکل جاتے ہیں۔
قابل رشک صحت۔صبح خالی پیٹ تین چار سیب کھا کر ایک گلاس دودھ ایک دو ماہ پئیں۔
صحت قابل رشک ہو جاتی ہے۔
بھوک نہ لگنا۔تازہ سیب کے جوس میں چٹکی بھر سیاہ مرچ،سفید زیرہ اور نمک ملا کر پینے سے بھوک میں اضافہ ہوتا ہے۔معدہ طاقتور ہوتا ہے اور غذا جزوبدن بننے لگتی ہے۔
سیب صحت مند دل کے لئے۔ایک تحقیق کے مطابق جسم سے سیب کا ایک اعلیٰ فائبر کا تعلق ہے۔اعلیٰ فائبر کا زیادہ استعمال کولیسٹرول کو کم کرتا ہے دل کی شریانوں کی بیماری میں مبتلا ہونے سے روکتاہے جس سے کسی بھی شخص کی صحت خراب ہو سکتی ہے۔سیب میں فینولک کمپا¶نڈ پایا جاتا ہے۔جوکولیسٹرول کو بڑھنے سے روکتا ہے۔یہ صحت مند خون کے بہا¶ کو روکتا ہے۔
پتھری کا علاج۔سیب میں موجود فائبر کی اعلیٰ مقدار پتھری کی روک تھام میں اہم کردار ادا کرتی ہے۔
سیب کے ساتھ مضر اثرات دور کرنا۔جنک فوڈ اور کولڈرنک کے زیادہ استعمال سے انسانی جگر متاثر ہوتا ہے۔
سیب جگر کو زہریلے مادوں سے پاک رکھنے کا سب سے آسان طریقہ ہے۔حالیہ تحقیقی رپورٹس میں سیب کو دیگر غذا¶ں کے ساتھ ملانے یا دن کے مخصوص اوقات میں کھانے کے فوائد بھی سامنے آئے ہیں۔
سبز چائے اور سیب۔تحقیق کے مطابق سیب اور گرین ٹی میں ایسے قدرتی کیمیکلز موجود ہوتے ہیں جو جسم کو امراض قلب اور کینسر وغیرہ سے تحفظ دیتے ہیں۔
سیب اور ٹماٹر۔روزانہ ایک سیب یا ٹماٹر کا استعمال بڑھاپے کے اثرات کو روکنے میں مددگار ہو سکتا ہے۔ایک تحقیق میں سیب کے چھلکوں اور سبز ٹماٹروں میں ایک ایسا کیمیکل دریافت کیا گیا ہے جو عمر بڑھنے کے ساتھ پٹھوں میں آنے والی تنزلی کی روک تھام کا کام کرتا ہے۔تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ عمر بڑھنے کے ساتھ ایک پروٹین اے ٹی ایف 4پٹھوں یا مسلز میں کمزوری آنے لگتی ہے۔
دو ماہ تک سیب یا سبز ٹماٹر کا استعمال اس کی روک تھام کرتا ہے۔محققین کا کہنا ہے کہ ان دونوں چیزوں میں پائے جانے والا قدرتی عنصر عمر بڑھنے سے مرتب ہونے والے اثرات کی روک تھام کرتا ہے۔
سیب اور کیلے۔روزانہ ایک سیب یا کیلا کھانا ہارٹ اٹیک یا فالج سے موت کا خطرہ نمایاں حد تک کم کر دیتا ہے۔آکسفورڈ یونیورسٹی کی تحقیق میں کہا گیا ہے کہ روزانہ ایک کیلا یا ایک سیب خون کی شریانوں کی پیچیدگیوں سے لاحق ہونے والے امراض سے موت کا خطرہ ایک تہائی حد تک کم کر دیتا ہے۔تحقیق میں کہا گیا ہے کہ یہ پھل تازہ ہونے چاہئے کیونکہ پراسیس شدہ پھل میں سے بیشتر طبی فوائد ختم ہو جاتے ہیں۔
کم از کم ایک سیب تو روز ضرور کھائیں۔ایک سیب روزانہ فالج کی روک تھام کرتا ہے،ایک ڈش تحقیق کے دوران دس برسوں تک بیس ہزار سے زائد افراد میں پھلوں اور سبزیوں کے استعمال کا جائزہ لیا گیا،نتائج سے معلوم ہوا کہ سرخ سیب کھانے کی عادت رکھنے والوں میں فالج کا خطرہ نو فیصد تک کم ہو جاتا ہے جبکہ دیگر رنگوں والے پھلوں سے یہ فائدہ نہیں ہوتا۔
تازہ سیب میں چوراسی فیصد پانی ہوتا ہے۔سیب میں فاسفورس تمام پھلوں اور سبزیوں سے زیادہ پایا جاتا ہے۔اس لئے سیب کا چھلکا ضائع نہیں کرنا چاہیے۔روزانہ نہار منہ ایک یا دو سیب کھانے سے صحت قابل رشک ہو جاتی ہے۔یہ گردوں کی صفائی کے لئے بھی بہترین ٹانک ہے۔
مربہ سیب۔پانچ سے چھ موٹے سیب لے کر ان کے اندر سے بیج نکال دیں۔پانی میں ہلکا سا جوش دیں۔نیم پختہ ہونے پر چینی کی چاشنی ڈال کر تھوڑی دیر کے لئے آگ پر پکائیں۔قوام گاڑھا ہونے پر آگ سے اتار کر شیشے کی بوتل یا جار میں محفوظ کر لیں۔بطور ناشتہ سنہری ورق میں لپیٹ کر استعمال کرنا مقوی قلب و دماغ ہے۔
٭٭٭٭٭٭٭

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*