جب توسیع ہی کرنا ہوتی ہے تو آخری تاریخ کی تشہیری مہم پر کروڑوں روپے کیوں خرچ کئے جاتے ہیں‘ پاکستان ٹیکس فورم

لاہور( سپورٹس ڈیسک )پاکستان ٹیکس فورم نے کہا ہے کہ فیڈرل بورڈ آف ریو نیو کی مبہم پالیسیاں نقصان کا باعث ہیں ، جب لوگوں کو معلوم ہے کہ ٹیکس گوشوارہ جمع کرانے کی تاریخ بڑھا دی جائے گی تو پھر وہ کیوں بروقت اپنا گوشوارہ جمع کرائیں گے ، جو گوشوارہ یکم جولائی کو آناچاہیے وہ اگست میں آتا ہے اس کی ذمہ داری کس پر عائد ہوتی ہے ۔پاکستان ٹیکس فورم کے چیئرمین ذوالفقار خان نے وزیراعظم ، مشیر خزانہ ، سیکرٹری خزانہ اور چیئرمین ایف بی آر کو لکھے گئے کھلے خط میں کہا ہے کہ ایف بی آر نے پوری قوم کو شکوک وشبہات میں مبتلا کر رکھا ہے ، 26لاکھ گوشوارے جمع کرنے سے زیادہ اخراجات کر دئیے جاتے ہیں۔خط کے متن میں کہا گیا ہے کہ ایف بی آر گوشواروں کی تشہیری مہم کے اخراجات کی تفصیلات سے آگاہ کرے ۔ اگر قانون موجود ہے اور ٹیکس دہندگان کو 30 ستمبر کی آخری تاریخ کا معلوم ہے تو پھر گوشوارہ ستمبر میں کیوں جمع نہیں ہوتا یہ غلطی کس کی ہے ؟۔ جو گوشوارہ یکم جولائی کا آنا چاہیے اس کا فارم اگست میں آتا ہے ۔ایف بی آر گوشوارہ جمع کرانے کی آخری تاریخ30 ستمبر ہونے کی تشہیری مہم پر کروڑوںروپے کے اخراجات کرتا ہے لیکن پھر تاریخ میں توسیع کر دی جاتی ہے ۔۔ خط کے متن میں کہا گیا ہے کہ تمام اخراجات کی تفصیلات سے آگاہ کیا جائے تاکہ قوم جان سکے ٹیکس ریٹس کم کر کے ریلیف دینے کی بجائے ایف بی آر لاکھوں، کروڑوں روپے ضائع کر رہا ہے ۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*