اپوزیشن احتساب سے بچنے کےلئے ایک دوسرے کے پیچھے چھپ رہی ہے، شبلی فراز

کراچی (آئی این پی) وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات سینیٹر شبلی فراز نے کہا ہے کہ اپوزیشن جماعتوں کی کوئی احتجاجی تحریک نہیں ہے، صرف عوام کی آنکھوں میں دھول جھونکنا چاہتی ہے، اپوزیشن احتساب سے بچنے کےلئے ایک دوسرے کے پیچھے چھپ رہی ہے، ان سب کے اپنے مفادات ہیں، پی ڈی ایم والے پارلیمان سے استعفے دیں گے تو ا قبول کر کے الیکشن کرائیں گے لیکن استعفے دینا آسان نہیں ہے،وزیراعظم نے خصوصی ہدایات کی ہیں کہ میڈیا کے بقایاجات جلد از جلد ادا کئے جائیں، الیکٹرانک اور پرنٹ میڈیا دونوں کے بقاجات اجات ادا کئے جارہے ہیں ، واجبات کی ادائیگی اس صورت میں ہو گی جب میڈیا مالکان کی جانب سے صحافیوں اور دیگر ورکرز کو تنخواہوں کی ادائیگی مکمل ہو اور ان کے تمام بقایا جات کو ختم کیا جائے، تنخواہیں موجودہ ماہ کی دی گئی ہوں کوئی بھی پرانے بقایا جات نہ ہوں ۔ بدھ کو وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات سینیٹر شبلی فراز نے کراچی میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم عمران خان نے 22 سال سیاسی جدوجہد کی ہے جو انتہائی صبر آزما اور کڑی تھی، عمران خان مشکلات کو سہتے ہوئے اور اپنے مقاصد کے حصول کےلئے مستقل رہے جبکہ ان کے سفر میں میڈیا کا بھی اہم کردار ہے لیکن آج میڈیا مشکلات میں ہیں ان کی مشکلات کا وزیراعظم کو معلوم ہے، وزیراعظم نے خصوصی ہدایات کی ہیں کہ میڈیا کے بقایاجات جلد از جلد ادا کئے جائیں، الیکٹرانک اور پرنٹ میڈیا دونوں کے بقاجات اجات ادا کئے جارہے ہیں اور ہماری کوشش ہے کہ میڈیا مالکان صحافیوں کو تنخواہوں کی ادائیگی کریں، دوسرے کاموں میں استعمال نہ کریں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت واجبات کی ادائیگی کے لائحہ عمل تیار کر رہی ہے اور 15دنوں میں وہ آجائیں گی ، جس پر بات لازمی رکھا گیا ہے کہ واجبات کی ادائیگی اس صورت میں ہو گی جب میڈیا مالکان کی جانب سے صحافیوں اور دیگر ورکرز کو تنخواہوں کی ادائیگی مکمل ہو اور ان کے تمام بقایا جات کو ختم کیا جائے، تنخواہیں موجودہ ماہ کی دی گئی ہوں کوئی بھی پرانے بقایا جات نہ ہوں کیونکہ ہماری حکومت کا مقصد یہ ہے کہ صرف مالکان کو سہولت نہ دیں سہولتیں تمام ملازمین اور صحافیوں کو ملیں۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ صحافیوں کے ہاﺅسنگ سکیم پر بھی کام کیا جا رہا ہے، یونیورسل ہیلتھ سروس بھی دینے کے حوالے سے کوشش وہ گی۔ وفاقی وزیر نے صحافیوں کے سوال پر جواب میں کہا کہ اپوزیشن کی کوئی سیاسی تحریک نہیں ہے، ایم آر ڈی والوں نے پھر بھی نظام مصطفی کا نعرہ لگایا انہوں نے تو اپنی جائیداد بچانے کی تحریک بنائی ہے، اپوزیشن کے پاس عوام کے پاس لانے کو کچھ نہیں ہے، ایسا تو ہے نہیں کہ تحریک انصاف حکومت دو سال میں سب کچھ تباہ کر دیا ہو، اپوزیشن صرف عوام کی آنکھوں میں دھول جھونک رہے ہیں اور حکومت پر پریشر ڈالنے کی کوشش کر رہے ہیں کہ انہیں این آر او مل جائے، جو حکومت بالکل بھی نہیں دے گی، اپوزیشن کی بلیک میلنگ میں کبھی نہیں آئیں گے۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن اپنی حکومت میں کرپشن کے علاوہ کسی دوسرے کام پر توجہ نہیں، تمام ادارے دس سے پندرہ سالوں میں ناکارہ ہو چکے ہیں، دو سال میں ہماری حکومت نے سب ادارے ختم نہیں کئے ہیں، ہم عوام کے سامنے تمام اعداد و شمار رکھیں جو گزشتہ دور کے تھے اور جو ہم نے کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن احتساب سے بچنے کےلئے ایک دوسرے کے پیچھے چھپ رہے ہیں، ان سے سب مفادات مختلف ہیں جبکہ اگر اپوزیشن پارلیمان سے استعفے دیتی ہے تو ہم قبول کریں گے اور الیکشن بھی کرائیں گے لیکن استعفیے دینا آسان کام نہیں ہے

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*