پی ڈی ایم کاساتھ دینے والوں کو تاریخ معاف نہیں کرے گی ،سردار یار محمد رند

Sardar Yar Muhammad Rind

کوئٹہ(سٹاف رپورٹر)پاکستان تحرےک انصاف کے مرکزی رہنماءو صوبائی وزےر تعلےم سردار ےار محمد رند نے کہا ہے کہ کرپشن ، نااہلی اور اداروں سے ٹکراو کی سیاست کرنے والی جماعت والے اپنی مغلیہ سلطنت بنانا چاہتے ہیںاپوزیشن کی جماعتیں پی ٹی آئی کی حکومت گرانے کےلئے متحد ہوئی ہیںپی ڈی ایم کاساتھ دینے والوں کو تاریخ معاف نہیں کرے گی سی پیک کی تکمیل سے بلوچستان میں ترقی کا نیا دور شروع ہوگا میاں صاحب اینڈ کمپنی کو لوٹ مار کے سوا کچھ نہیں آتامیاں اور زرداری تیسری بار بھی مولانا کو دھوکہ دیں گے عمران خان کسی کو این آر او نہیں دے گاہماری حکومت کی جانب سے کوئی کرپشن کاکیس نہیں بنا‘میاں نے زرداری اورزرداری نے میاں کے خلاف کیسز بنائے نواز شریف چند دنوں میں مزید بے نقاب ہوں گے‘ تعلےم کی بہتری کےلئے محکمہ کو چےلنج سمجھ کر قبول کےا تعلےم کے حوالے سے جو نشاندہی کرے بھرپور کارروائی کرونگا ‘ےہ بات انہوں نے پارلےمانی ممبران ڈپٹی سپےکر بلوچستان اسمبلی سردار بابرخان موسیٰ خےل‘ اراکےن اسمبلی مبےن خان خلجی‘ فرےدہ رنداور قومی اسمبلی ممبر منورہ منےر کے ہمراہ پرےس کانفرنس کرتے ہوئے کہی‘اس موقع پر پارٹی کے صوبائی صدر ڈاکٹر منےر بلوچ‘ جنرل سےکرٹری عبدالباری بڑےچ‘ بسم اللہ آغا ‘زلےخا مندوخےل بھی موجود تھے‘ سردار ےار محمد رند نے کہاکہ عمران خان کسی آمر کی گود میں بیٹھ کر وزیر اعظم نہیں بنامیاں نواز شریف کے بیان سے ملک کی سالمیت کو نقصان پہنچ سکتاہے عمران نے مودی کے پلان ناکام کردیاہے جس پر نواز شریف کارہے عمران خان کسی کو این آر او نہیں دے گا انہوں نے کہاکہ پی ڈی ایم کاساتھ دینے والوں کو تاریخ معاف نہیں کرے گی میاں اور زرداری تیسری بار بھی مولانا کو دھوکہ دیں گے مسترد عناصر جلسہ کرکے کیا کرنا چاہتے ہیں ان کا ایجنڈہ سمجھ نہیں آیا انہوں نے کہاکہ کرپشن ، نااہلی اور اداروں سے ٹکراو کی سیاست کرنے والی جماعت والے اپنی مغلیہ سلطنت بنانا چاہتے ہیں “ن” لیگ ملک میں سیاسی قیادت اور اداروں کو ایک پیج پر دیکھنا نہیں چاہتی شاہد خاقان عباسی نے اپنی ملکیت ائیر لائن کو چمکانے کے لیے پی آئی اے کو ڈبو دیا انہوں نے کہاکہ اورنج ٹرین اور دیگر منصوبوں پر 200 ارب روپے جھونکے گئے میاں صاحب اینڈ کمپنی کو لوٹ مار کے سوا کچھ نہیں آتا زرداری صاحب نے این ایف سی ایوارڈ دیا لیکن سوال یہ ہے کہ یہ ہزاروں ارب روپے کہاں خرچ ہوئے سی پیک کی تکمیل سے بلوچستان میں ترقی کا نیا دور شروع ہوگا انہوں نے کہاکہ ماضی میں مولانا فضل الرحمن جن کو چور و ڈاکو کہتے تھے آج وہ چور و ڈاکو مولانا کی چھتری تلے جمع ہورہے ہیں مولانا فضل الرحمن کو چور و ڈاکو الائنس کا سربراہ نہیں بننا چاہیے بلکہ منتخب جمہوری حکومت کا ساتھ دینا چائیے شریف فیملی پر اربوں روپے کی کرپشن ثابت ہو چکی ہے موجودہ حکومت نے کوئی کیس نہیں بنایا زرداری کے کیس میاں صاحب پر اور میاں کے قائم کردہ کیس زرداری پر ہیں میاں نواز شریف بہانہ بنا کر لندن بھاگ گئے انہوں نے کہاکہ پی ٹی آئی 22 سالہ جدوجہد کے بعد عوام کے ووٹوں سے اقتدار میں آئی میاں صاحب کی پالیسی سے ملک کو نقصان پہنچ سکتا ہے اور اس سے دشمن قوتیں فائدہ اٹھا سکتی ہیں پیپلز پارٹی اور ن لیگ نے ملک کو ڈیفالٹر کرنے کے لیے بے تحاشہ قرضے لئے کرپٹ عناصر کو کسی صورت این آر نہیں ملے گا دینی اور قوم پرست جماعتوں کو پاکستان اور جمہوری نظام کے خلاف سازشوں سے دور رہنا چاہیے انہوں نے کہاکہ ملک پر کئی سالوں سے قابض ہونےوالی جماعتےں اپنی کرپشن چھپانے کےلئے مےدان مےں آکر بلوچستان کے چھوٹی جماعتےں اےک بار پھر ساتھ ملا کر اپنی کرپشن چھپانے کےلئے کوششوں مےں مصروف ہے لےکن ان جماعتوں کے کوششےں نہ پہلے کامےاب ہونگے نہ اب کامےاب ہونے دےنگے تعجب کی بات ےہ ہے کہ 2018الےکشن کے بعد حکومت تشکےل ہونے سے قبل مسلم لےگ(ن) کے ترجمان مرےم اورنگزےب نے بےان دےا کہ ےہ ناکام ترےن حکومت ہے لےکن ہم ان لوگوں پر واضح کرنا چاہتے ہےں کہ جس طرح پہلے ہم پر تنقےد کی کامےاب نہےں ہوئے اب اےک بار پھر کامےاب نہےں ہونے دےنگے اداروں کےخلاف سازشوں سے قبضہ ہے خدشہ ہے کہ ہماری سرحدےں کمزور ہونگی بلکہ دشمن ملک بھی فائدہ اٹھا سکتا ہے انہوں نے کہاکہ ہماری حکومت عوام کے ووٹوں سے منتخب ہو کر آئی ہے نواز شرےف آمرےت کی گود مےں بےٹھ کر تےن دفعہ حکمرانی کی آج کس منہ سے اداروں کےخلاف کارروائی کرتے ہےں‘ انہوں نے اےک سوال کے جواب مےں کہاکہ کوئٹہ سمےت بلوچستان کے دےگر علاقوں مےں تعلےم کی بہتری کےلئے کوشاں ہے تعلےم کا محکمہ چےلنج سمجھ کر قبول کےا اس حوالے سے اگر کوئی درست نشاندہی کرے تو ہم کارروائی کرےنگے لےکن کسی کو ےہ حق نہےں کہ وہ بغےر ثبوت کرپشن کے الزامات لگا کر کسی کی کردار کشی کرےں‘ مبےن خان خلجی نے کہاکہ اےک بار پھر ناکام سےاستدا ن حکومت کےخلاف متحد ہو گئے لےکن کامےابی موجودہ حکومت کی ہے مولانا فضل الرحمن ےہ درخواست ہے کہ وہ دےنی مدارس کے طلباءسےاست مےں استعمال کرنے کی بجائے ان کی تعلےم پر توجہ دی جائے ورنہ آنےوالی نسل ان کو معاف نہےں کرےگی جس طرح ملک مےں احتسابی عمل جاری ہے اور ہر اےک احتساب کےلئے اپنے آپ کو پےش کررہا ہے مولانا فضل الرحمن بھی احتساب کےلئے پےش ہو جائے ۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*