مشترکہ حکمت عملی جدید ملٹری آپریشنز کیلئے بنیادی اہمیت کی حامل ہیں،نیول چیف

اسلام آباد (آئی این پی ) چیف آف نیول اسٹاف ایڈمرل ظفر محمود عباسی نے کہاہے کہ مشترکہ حکمت عملی جدید ملٹری آپریشنز کیلئے بنیادی اہمیت کی حامل ہیں ، پاک بحریہ ریجنل میری ٹائم سیکیورٹی پٹرول جیسے انفرادی اور مشترکہ میری ٹائم سیکیورٹی اقدامات کے ذریعے بین الاقوامی پانیوں کی سیکیورٹی اور تحفظ کو یقینی بنانے کے لیے ہمیشہ ہراول دستے کا کردار ادا کرتی رہی ہے، ملکی معیشت کے استحکام کے لیے سمندری وسائل کی بہت اہمیت و افادیت ہے ،اس حوالے سے پاک بحریہ حکومت کی معاونت میں اہم کردار ادا کر رہی ہے،اللہ تعالیٰ کی ذات پر کامل یقین کے ساتھ پاک بحریہ اپنی سمندری حدود کی حفاظت سے متعلق کسی بھی چیلنج سے نمٹنے کے لیے ہمہ وقت تیار ہے۔ منگل کو چیف آف دی نیول اسٹاف ایڈمرل ظفر محمود عباسی نے نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی اسلام آباد کا دورہ کیا اور نیشنل سکیورٹی اور وار کورس کے شرکاءسے خطاب کیا۔ یونیورسٹی پہنچنے پر نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی کے پریذیڈنٹ لیفٹیننٹ جنرل محمد سعید نے نیول چیف کا استقبال کیا۔ کورس کے شرکاءسے خطاب کرتے ہوئے نیول چیف نے خطے کے جیو اسٹریٹیجک ماحول اور انڈین اوشن ریجن میں موجودہ سیکیورٹی کی صورت حال پر اظہار خیال کیا اور پاکستان کے لیے دستیاب مواقع اور درپیش میری ٹائم سکیورٹی چیلنجز پر روشنی ڈالی۔ امیر البحر نے مزید کہا کہ مشترکہ حکمت عملی جدید ملٹری آپریشنز کیلئے بنیادی اہمیت کی حامل ہیں۔ملکی سمندری حدود کو درپیش خطرات کے پیش نظرایڈمرل ظفر محمود عباسی نے پاکستان نیوی کے ایسے ترقیاتی منصوبوں اور دیگر اقدامات کا بھی ذکر کیا جن کے پیچھے پاک بحریہ کو خطے میں ایک اہم میری ٹائم قوت بنانے کا تصور کارفرما ہے۔نیول چیف نے اس امر پر زور دیا کہ پاک بحریہ ریجنل میری ٹائم سیکیورٹی پٹرول جیسے انفرادی اور مشترکہ میری ٹائم سیکیورٹی اقدامات کے ذریعے بین الاقوامی پانیوں کی سیکیورٹی اور تحفظ کو یقینی بنانے کے لیے ہمیشہ ہراول دستے کا کردار ادا کرتی رہی ہے۔ نیول چیف نے ملکی معیشت کے استحکام کے لیے سمندری وسائل کی اہمیت و افادیت پر روشنی ڈالی اور اس حوالے سے پاک بحریہ حکومت کی معاونت میں اہم کردار ادا کر رہی ہے۔افواج پاکستان کے آپریشنل عزم کو سراہتے ہوئے نیول چیف نے کہا کہاللہ سبحان و تعالی کی ذات پر کامل یقین کے ساتھ پاک بحریہ اپنی سمندری حدود کی حفاظت سے متعلق کسی بھی چیلنج سے نمٹنے کے لیے ہمہ وقت تیار ہے۔ انھوں نے کورس کے شرکاءکو تلقین کی کہ وہ اپنے پیشہ وارانہ امور پر گہری نگاہ کے ساتھ اسلامی تاریخ اور نظریہ پاکستان سے رہنمائی حاصل کریں۔ امیرالبحرنے مسلح افواج کے افسران کو مستقبل کے چیلنجز سے روشناس کروانے کیلیے نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی کے کردارکو سراہا۔نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی پاکستان کا اعلی عسکری تربیت کا ادارہ ہے جہاں افواج پاکستان اور دیگردوست ممالک کے افسران کو جدید عسکری تربیت دی جاتی ہے تاکہ وہ مسیقبل میں اہم عہدوں پر فرائض انجام دے سکیں۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*