صو بائی دا ر الحکومت کوئٹہ کے حل طلب مسائل

صو بائی دا ر الحکومت میں پا نی کی عدم دستیا بی سمیت دیگر مسائل حل طلب ہیں جس کی وجہ سے عوا م کو شد ید مشکلا ت کا سا منا ہے ان مسائل میں پا نی کی قلت ،گیس پر یشر اور سڑ کو ں کی حا لت زا ر شا مل ہے ۔
صو بائی دا ر الحکومت کوئٹہ میں پا نی کا بحران ایک عر صے سے جا ری ہے جس پر متعلقہ محکمہ قا بو پانے میں نا کا م ہو چکا ہے شہر کے اکثر ٹیو ب ویلو ں کی بجلی منقطع ہو نے کی اطلا عا ت ہیں جو و ا جبا ت کی عد م ادا ئیگی کے باعث منقطع کئے گئے اس پر محکمہ وا سا کا مو قف ہے کہ اس کے پا س بلو ں کی ادا ئیگی کے لیے فنڈ نہیں ہے وہ ا س کی ذمہ دا ری عو ام پر ڈا ل رہا ہے کہ وہ بلو ں کی ادا ئیگی نہیں کر رہے ہم سمجھتے ہیں کہ محکمہ وا سا کا عو ام پر ملبہ ڈا لنا قا بل مذمت ہے جب وہ عو ام کو پانی ہی فر اہم نہیں کر رہا تو پھر بل کیسے؟اگر کچھ علا قو ں میں وہ پا نی با قا عد گی سے سپلا ئی کررہا ہے تووہا ں اس کو بلو ں کی وصو لی کا حق بنتا ہے وہ وہا ں بے شک کا رو ائی کر کے وا جبا ت وصول کر ے لیکن اس سب کی سز ا تما م عوا م کو دینا بلا شبہ نا انصا فی ہے پا نی کی عد م دستیا بی کے باعث عو ام ایک عر صے سے ٹینکر ز ما فیا کے رحم و کر م پر ہے جن کیلئے پا نی وا فر مقد ا ر میں مو جو د ہے لیکن سر کا ری نلکو ں میں یہ نہیں آرہا اس سے ایسا لگتا ہے کہ یہ وا سا اور ٹینکر ما فیا کی ملی بھگت ہے ۔
شہر کے اکثر علا قو ں میں مو سم شد ید گر م ہونے کے با وجو د گیس پر یشر کم ہونے کی اطلا عا ت ہیں جو کہ سوئی سد رن گیس کمپنی کی کا ر کر د گی پر سو الیہ نشا ن ہے سر د ی کے مو سم میں تو وہ پر یشر میں کمی کا بہا نہ زیا دہ لو ڈ بتا تے تھے لیکن اب شد ید گر می میں وہ کیا جو از بتا ئیں گے ؟اس لیے ا ن کو چا ہیئے کہ وہ عوا م کیسا تھ زیا دتی کر نے سے با زآجا ئیںبلو ں کو دیکھا جائے تو وہ تو بہت ہی زیا دہ ہو تے ہیں لیکن اس کے جو اب میں صار فین کو کمپنی کیا دیتی ہے؟ان کو گر م مو سم میں بھی اس کو گیس سے محر وم کیا جا رہا ہے۔
کوئٹہ کی اہم سڑ ک نو ا ں کلی با ئی پا س کو ایک عر صے سے اکھا ڑ کر رکھ دیا گیا ہے نو اں کلی سے اوڑ ک تک اس رو ڈ کی وجہ سے شدید گر دو غبا ر کا را ج ہے جس کی وجہ سے عوام کو شد ید مشکلا ت سے دو چا ر ہو نا پڑرہا ہے عوامی حلقو ں نے متعلقہ محکمہ کی اس حر کت پرشد ید نا ر ا ضگی کا اظہا ر کر تے ہو ئے اس کے خلا ف کا رو ائی کا مطا لبہ کیا ہے کہ اس نے ایک عر صے سے رو ڈ کو اکھا ڑ دیا ہے لیکن اس کو مکمل نہیں کیا جا رہا ہے جبکہ دوسر ی جا نب شہر کی اہم اور مصر ف شا ہر اہ زر غو ن رو ڈ پرا کر م ہسپتا ل کے سا منے سڑ ک کی حا لت بہت ہی ابتر ہے جو کہ ایک عر صہ ہو گیا ہے یہ ٹوٹ پھوٹ کاشکا ر ہے جہا ں سے گا ڑ یو ں کا گذ رنا بہت ہی مشکل ہے لیکن اتنا اہم رو ڈ ہونے کے با و جو د یہ حکو متی لوگو ں اور متعلقہ محکمو ں کو با لکل نظر نہیں آرہا اور اس کی مر مت نہیں کی جا رہی۔
ہم سمجھتے ہیں کہ اس طرح کے مسا ئل کو حل نہ کرنا بلاشبہ صوبائی حکومت اور متعلقہ محکمو ں پر ایک سو الیہ نشا ن ہے جوان اہم مسا ئل کونظر اند از کررہے ہیں اس پرکوئی تو جہ نہیں دے رہے جو قا بل مذمت اقد ام ہے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*