کوئٹہ: ہزارہ ٹاؤن میں نوجوان کا بہیمانہ قتل:11 مبینہ افرادگرفتار

کوئٹہ: ہزارہ ٹاؤن میں نوجوان کے بہیمانہ قتل کا مقدمہ تاحال درج نہ ہوسکا، تاہم پولیس نے ویڈیوز کی مدد سے شناخت کرکے 11 مبینہ افراد کو گرفتار کرلیا ہے۔گزشتہ رات ہزارہ ٹاؤن میں ہجوم نے 3 نوجوانوں کو بدترین تشدد کا نشانہ بنایا، جس میں ایک نوجوان بلال نورزئی جاں بحق جبکہ 2 شدید زخمی ہوگئے تھے۔ زخمیوں کا علاج سول اسپتال میں جاری ہے۔واقعے کے خلاف لواحقین نے ریڈ زون میں دھرنا دے دیا۔ لواحقین کا مطالبہ ہے کہ ڈی ایس پی اور ایس ایچ او تھانہ بروری کے خلاف کاروائی کی جائے اور قاتلوں کو گرفتار کرکے قرار واقعی سزا دی جائے۔

صوبائی وزیرداخلہ نے کیرانی روڈ واقعہ پر ایس ایچ او بروری تھانے کو معطل کردیا ہے۔ وزیرداخلہ نے بتایا کہ ایس ایچ او کوغفلت برتنے پر معطل کیا گیا۔اس کے علاوہ وزیرداخلہ بلوچستان میرضیاء لانگو نے متعلقہ اداروں کو واقعے کی تحقیقات کی رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت  کردی ہے۔وزیرداخلہ ضیاء لانگو نے کہا ہے کہ قانون سے بالاتر کوئی نہیں، حکومتی رٹ کو جو کوئی بھی چیلنج کرے گا، ان کے خلاف سخت سے سخت قانونی کارروائی کی جائے گی، لواحقین کےغم میں برابر کے شریک ہیں، صوبائی حکومت تمام پہلوؤں سے جائزہ لے کر واقعے کے ذمہ داران کو کیفر کردار تک پہنچائے گی۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*