کورونا ،خاتمے، کے بعد،حکومت ٹیکسیشن کے نظام کو نئی بنیاد پر کھڑا کرے

Pakistan Tax Bar association

لاہور( کامرس ڈیسک)پاکستان ٹیکس بار ایسوسی ایشن نے کہا ہے کہ ملک میں خوف و ہراس سے پاک ، از خود ٹیکس نیٹ میں شامل ہونے اور ادائیگی کرنے کے ٹیکسیشن نظام کی نئی بنیاد نا گزیر ہے ،اس کےلئے کامیاب ممالک کو سٹڈی کیا جائے اور مشاورت کے بعد ٹیکسیشن کے نظام کی پارلیمنٹ سے منطوری لی جائے ،حکومت لوگوں کی امداد کے لئے تین ماہ کے لیے عبوری طو رپر بلدیاتی نظام بحال کرے اور اس کے ساتھ گھروں تک امداد اور راشن پہنچانے کے لیے ریٹائرڈ فوجیوں سے مدد لی جائے۔ ان خیالات کا اظہار پاکستان ٹیکس بار کے صدرآفتاب ناگرہ، سینئر نائب صدر قاری حبیب الرحمن زبیری، نائب صدر سہیل اختر، جنرل سیکرٹری فرحان شہزاد، سیکرٹری اطلاعات شہباز صدیق اور دیگر ممبران نے ویڈیو لنک پر منعقدہ مذاکراے میں کیا ۔عہدیداروں نے کہا کہ کورونا ٹائیگر ز فورس اپنے قیام سے قبل ہی سیاست کی نظر ہو گئی ہے جبکہ موجودہ حالات ہمیں ایسی کسی تفریق میںنہیں پڑنا چاہیے ۔ بلدیاتی اور عام انتخابات میں بھی پاک فوج کی مدد لی جاتی ہے اس لئے موجودہ حالات میں حکومت بلدیاتی اداروں کو عبوری طو رپر تین ماہ کے لئے بحال کر کے پاک فوج کے ریٹائرڈ ملازمین کو اس میں شامل کر کے لوگوں کی مدد کرے ۔پاکستان ٹیکس بار کے عہدیداروں نے کہا کہ کورونا وائرس کی وباءکے بعد حکومت کے معاشی حالات مزید خراب ہوں گے جنہیں سدھارنے کےلئے ٹیکسیشن کا مضبوط اور شفاف نظام نا گزیر ہے ۔ ملک میں ایسے نظام کی ضرورت ہے جس کے تحت لوگ خود ٹیکس نیٹ میں شامل ہوں اور ادائیگی بھی کریں ۔ موجودہ نظام کی وجہ سے لوگوں میں خوف و ہراس پایا جاتا ہے کیونکہ رضا کارانہ ٹیکس نیٹ میں شامل ہونے والا شکنجے میں آ جاتا ہے اور ٹیکس نہ دینے والے پر کوئی بوجھ نہیں اس لئے ہمیں اس نظام میں توازن لانا ہوگا۔موجودہ حالات میں ٹیکس کے نظام کو نئی بنیاد پر کھڑا کرنے کی ضرورت ہے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*