تعلیم اور صحت کے شعبوں کو ترجیح حاصل ہے،وزیراعلیٰ بلوچستان

Chief Minister Balochistan, Mir Jam Kamal

سوئی(خ ن)وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے کہا ہے کہ عوام کی حکومتوں سے کوئی زیادہ بڑی خواہشات نہیں ہوتیں، وہ تعلیم، صحت، روزگار، پانی اور مواصلات سمیت زندگی کی بنیادی سہولتیں مانگتے ہیں اور صوبائی اور وفاقی حکومت سے اپنی ضروریات پوری ہونے کی توقع رکھتے ہیں، عوامی توقعات پر پورا اترنے کے لئے حکومتی سطح پر منصوبہ بندی کی ضرورت ہوتی ہے، موجودہ صوبائی حکومت نے دستیاب وسائل کے مطابق ایسی ترقیاتی حکمت عملی وضع کی ہے جس کے تحت صوبے کے ہر ضلع اور تحصیل میں ترقیاتی کام ہوتے نظر آرہے ہیں، ان خیالات کا اظہار انہوں نے سوئی ٹا¶ن واٹر سپلائی اسکیم کا سنگ بنیاد رکھنے کے موقع پر منعقدہ عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا، صوبائی وزراءزمرک خان اچکزئی، نورمحمد دمڑ، میر عمر جمالی، اراکین صوبائی اسمبلی مبین خان خلجی، عبدالقادر نائل اور میر گہرام خان بگٹی بھی اس موقع پر موجود تھے، جبکہ قبائلی عمائدین اور عوام کی بڑی تعداد نے بھی تقریب میں شرکت کی، وزیراعلیٰ نے کہا کہ مخلوط صوبائی حکومت نے عوامی ضروریات کو سامنے رکھتے ہوئے صوبے کی مجموعی ترقیاتی منصوبہ بندی مرتب کی ہے اورایک ایسی جامع پالیسی تیار کی گئی ہے جس پر عملدرآمد سے زندگی کے ہر شعبہ میں بتدریج بہتری آئے گی، انہوںنے کہا کہ ماضی میں چند ایک اضلاع تو کثیر ترقیاتی فنڈ لے جاتے تھے جبکہ دیگر اضلاع ان سے محروم رہ جاتے تھے، اس کے نتیجے میں پسماندگی میں اضافہ ہوا ، حکومت نے اس بات کا احساس کرتے ہوئے ترقیاتی فنڈز کی تقسیم میں توازن پیدا کیا اور ہر ضلع کو کم سے کم اڑھائی سے تین ارب روپے تک کے ترقیاتی منصوبے دیئے گئے، وزیراعلیٰ نے کہا کہ دوردراز کے کم ترقیافتہ علاقوں کو رواں مالی سال کے بجٹ میں ترجیح دی گئی ہے اور انہیں قومی شاہراہوں کے ساتھ منسلک کرنے کے لئے رابطہ سڑکیں تعمیر کی جارہی ہیں تاکہ ان علاقوں کو ضلعی ہیڈکوارٹروں اور منڈیوں تک رسائی مل سکے، انہوں نے کہا کہ تعلیم اور صحت کے شعبوں کو ترجیح حاصل ہے، نئے بنیادی مراکز صحت، دیہی مراکز صحت کے قیام کے ساتھ ساتھ پہلے سے موجود بی ایچ یو اور آر ایچ سی کے ساتھ ساتھ ضلعی ہسپتالوں میں بہتری لائی جارہی ہے جبکہ پرائمری، مڈل اور ہائر سیکنڈری ایجوکیشن سطح پر نئے تعلیمی ادارے بنائے جارہے ہیں، وزیراعلیٰ نے کہا کہ ملک کی ترقی میں سوئی کا بہت بڑا کردار ہے جو 1954ءسے پورے ملک کو گیس فراہم کررہا ہے لیکن بدقسمتی سے سوئی ٹا¶ن 2020ءمیں بھی گیس، بجلی، پانی جیسی بنیادی سہولتوں سے محروم ہے، اس کی بنیادی وجہ ناقص منصوبہ بندی اور فنڈز کی غیر مساویانہ تقسیم ہے، انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت سوئی کی ترقی اور یہاں کے عوام کو بنیادی سہولتوں کی فراہمی کے لئے وسائل فراہم کرے گی، وزیراعلیٰ نے کہا کہ وہ صوبے کے تمام علاقوں کے دورے کرکے مسائل کا جائزہ لے رہے ہیں تاکہ آئندہ مالی سال کے ترقیاتی پروگرام میں ان علاقوں کی ضروریات کے مطابق مزید ترقیاتی منصوبے شامل کئے جاسکیں، قبل ازیں وزیراعلیٰ نے سوئی ٹا¶ن واٹر سپلائی اسکیم کا سنگ بنیاد رکھا، دریں اثناءوزیراعلیٰ نے پی پی ایل ہسپتال کا دورہ کیا اور ہسپتال کے مختلف شعبوں کا معائنہ کیا، اس موقع پر وزیراعلیٰ کو ہسپتال میں دستیاب سہولیات اور علاج معالجہ کے حوالے سے بریفنگ دی گئی، وزیراعلیٰ نے کہاکہ پی پی ایل اور صوبائی حکومت کے اشتراک سے قائم ہسپتال علاقے کے عوام کے لئے بہت بڑی سہولت ہے، انہوں نے ہدایت کی کہ ہسپتال کے ذریعہ عوام کو علاج معالجہ کی بہترین سہولتیں فراہم کی جائیں، دورہ سوئی کے موقع پر وزیراعلیٰ کو کچھی کینال کمانڈ ایریا ڈویلپمنٹ پروجیکٹ پر پیشرفت کے حوالے سے بھی بریفنگ دی گئی، وزیراعلیٰ نے کہا کہ کچھی کینال سے ڈیرہ بگٹی، نصیر آبادا ور جھل مگسی اضلاع کی لاکھوں اراضی کو زیر کاشت لایا جاسکے گا ، وزیراعلیٰ نے ہدایت کی کچھی کینال فیز ون کے کمانڈ ایریا کی ترقی کے منصوبے کو جلد از جلد مکمل کیا جائے تاکہ کچھی کینال سے بھرپور استفادہ ممکن ہوسکے، وزیراعلیٰ نے کچھی کینال کمانڈ ایریا کا فضائی جائزہ بھی لیا۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*