بلوچستان میں بارشوں اور برفباری کے باعث 22 افراد جاں بحق 28 زخمی،گیس لیکیج سے 5 افراد جاں بحق

کوئٹہ(این این آئی)بلوچستان میں 3روز کے دوران بارشوں برفباری کے باعث 22 افراد جاں بحق28 زخمی ہو گئے ، برفباری کے سبب کوئٹہ کا اندرون ملک سے رابطہ منقطع کئی پروازین منسوخ ہو گئیں،گیس اور بجلی نہ ہونے کے باعث شدید سردی میں شہری مختلف مسائل سے دوچار ہیں ۔تفصےلات کے مطابق بلوچستان میں بارشوں اور برفباری نے تباہی مچا دی کوئٹہ ،ژوب ، پشین ،چمن ، قلعہ سیف اللہ ، شیرانی اور خضدار میں مکانات کی چھتیں گرنے ، گیس لیکیج اور قومی شاہراہ پر ٹریفک حادثات میںبچوں اور خواتین سمیت 22 افراد جاں بحق ،28 زخمی ہوگئے ، کوئٹہ میں بجلی کے20 فیڈرٹرپ کر گئے جس کی وجہ سے کوئٹہ شہر کے اکثر علاقوں میں گزشتہ چوبیس گھنٹے سے بجلی کی فراہمی معطل ہے تو دوسری طرف گیس بھی غائب ہے جس نے شدید سردی میں شہریوں کے مسائل میں مزید اضافہ کردیا ہے اور عوام لکڑی اور کوئلہ جلاکر سردی کی شدت کو کم کرنے میں مصروف ہیں کوئٹہ سمیت دیگر علاقوں میں سرد ہوائیں چلیں تو ہر جگہ قلفی جم گئی شہری مزید نقصان سے بچنے کے لئے گھر کی چھتوں اور سڑکوں سے برف صاف کرتے رہے۔برفباری کے سبب کوئٹہ کا اندرون ملک سے رابطہ کئی گھنٹوں تک معطل رہا ، کئی پروازیں منسوخ ، کوئٹہ ائیر پورٹ پر طیارہ رن وے سے اتر گیا عام شہری اور قومی شاہراہوں پر سفر کرنے والے مسافر پریشانی سے دوچار ہیں۔محکمہ موسمیات کے مطابق گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران زیارت میں2 ، کوئٹہ 1 فٹ ،ژوب میں 9 انچ برف پڑی جبکہ اورماڑہ 40 ، خضدار، پشین 20، بارکھان 17،جیوانی میں 14ملی میٹر بارش ہوئی ، محکمہ موسمیات کے مطابق زیارت میں درجہ حرات منفی 6، ژوب اور کوئٹہ میں کم سے کم درجہ حرارت منفی 4 ڈگری سینٹی گریڈ رہا بارش اور برف برسانے والا سسٹم توبلوچستان سے نکل چکا لیکن سردی کی شدت بڑھے گی اور درجہ حرارت مزید کم ہونے کا خدشہ ہے۔ در یں اثنا ءکوئٹہ کے علاقے نیو سریاب میں گھر میں گیس لیکج سے ایک ہی خاندان کے5افراد جاں بحق ہوگئے۔ریسکیو زرائع کے مطابق نیو سرہاب کے علاقے میں گھر میں گیس بھر جانے سے ماں باپ اور تین بچے دم گھٹنے سے جاں بحق ہوگئے جن کی لاشیں سول ہسپتال منتقل کی گئیں اور ضروری کاروائی کے بعد ورثاءکے حوالے کردی گئی، رواں ماہ کے دوران کوئٹہ میں گیس لیکج سے ہونے والے تین واقعات میں 12 افراد جاں بحق ہوچکے ہیں

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*