ظا لم گیس انسا نی جانیں نگلنے لگ گیا

صوبائی دا ر الحکومت کوئٹہ میں گیس نے انسا نی جانوں کو نگلنا شر وع کر دیا ہے حا لیہ دنوں میں شہر میں گیس کی صورتحال انتہا ئی خر اب ہے جس میں پر یشر میں کمی اور
لو ڈ شیڈ نگ شا مل ہے جس کی وجہ سے جہاں عوام کو شد ید
سر دی میں مشکلا ت کا سا منا ہے وہاں ا ب ظا لم گیس کی وجہ سے انسا نی جانوں کا ضیا ع ہو رہا ہے حالیہ دنو ں میں اس وجہ سے متعد اد افراد جا ں بحق اور زخمی ہو چکے ہیں کیونکہ گیس کا
پر یشر کم ہونے کے سا تھ اس کی غیر اعلا نیہ لو ڈ شیڈ نگ بھی
زو ر و شو ر سے جا ری ہے جس کی وجہ سے اب امو ات ہو رہی ہیں جو کہ بہت افسو س کی با ت ہے اس کی جتنی مذمت کی
جا ئے کم ہے کہ سو ئی سدر ن گیس کمپنی اپنے صا رفین کی قا تل بن گئی ہے وہ نہ صر ف ان سے بھا ری بھر کم بل وصو ل کر رہی ہے وہاں ایک عر صہ گذ رنے کے با و جو د پر یشر میں کمی کا مسئلہ جو ں کا تو ں ہے یہ عمل ہر سا ل سردیوں کے آغا ز میں
شر وع ہو تا ہے اور اس طرح صا رفین اور سوئی سد رن گیس کمپنی کا آپس میں را بطہ ہو جا تا ہے صارفین پر یشر کم اور
لو ڈ شیڈ نگ کی شکا یا ت کر تے ہیں جبکہ سوئی سد رن گیس کمپنی کے حکام ان کو دلا سے اور تسلیا ں دیتے ہیں اور اس طر ح
مو سم سر ما ختم ہو جا تا ہے اور پھر سو ئی سدر ن گیس کمپنی کے حکام آرام کی ٹھا ن لیتے ہیں اور اس اہم مسئلے کو مستقل
بنیا دوں پر حل کرنے کے با ر ے میں کوئی منصوبہ بند ی نہیں کرتے اور یہ مسئلہ جو ں کا تو ں رہتا ہے گیس سے امو ا ت ہر سا ل ہو تی ہیں جس کی ذمہ دا ر سوئی سد رن گیس کمپنی ہے اگر وہ پر یشر میں کمی اور لو ڈ شیڈنگ کا مسئلہ مستقل بنیا دوں پر حل کر دے تو صورتحال ٹھیک ہو سکتی ہے لیکن یہ سب کچھ ہونے کے با وجو د سوئی سدر ن گیس کے ذمہ دا ر اپنی ذمہ دا ریوں کا احسا س با لکل نہیں کر تے ان کو اس سے کوئی سر و کا ر نہیں
چا ہے اس میں انسانی قیمتی جانوں کا ضیا ع ہی کیو ں نہیں ہو جا تا ان کوصر ف اپنے بل سے غر ض ہے جو بھا ری بھر کم ہو تے ہیں جن میں ہر سال مختلف قسم کے جر مانے ڈ ا ل کر عوام سے وصول کئے جا تے ہیں ایک جا نب مو جو دہ حکومت کے بر سر اقتدار آ تے ہی گیس کی قیمتوں میںکئی فیصد اضا فہ کر دیا گیا ہے اس کے بعد کمپنی کی جا نب سے مختلف قسم کے جر ما نے وصول کئے جا تے رہے ہیں جس سے عوام شد ید معا شی بحران سے دو چا ر ہے اور اب وہ امو ا ت کا بھی سا منا کر رہی ہے۔
اس لیے یہا ں ضرورت اس امر کی ہے کہ سوئی
سد رن گیس کمپنی حکام کو ہو ش کے نا خن لیتے ہوئے عوام کے مذکورہ مسائل کو سنجید ہ لیتے ہوئے ان کو مستقل بنیا دوں پر حل کرنے کے لیے ٹھو س اقد اما ت کرنے چا ہئیں اور گیس پر یشر اور لو ڈ شیڈنگ کا حل نکا لنا چا ہیئے اس کے سا تھ سا تھ حکومت کو بھی گیس کے نر خو ں میں تیز ی سے ہونے والے اضا فے کو روکنا چا ہیئے کیونکہ اس سے ایک غر یب عوام کا
ماہا نہ بجٹ بر ی طر ح متا ثر ہو رہا ہے اکثر صا رفین کو ان کی
تنخو اہوں سے زیا دہ گیس بل وصول ہو تے ہیں جن کی
اد ائیگی اس کے لیے نا ممکن ہو تی ہے اس طرح ان کے گھروں میں فا قوں کا ہونا ایک قد رتی با ت ہے جو کہ حکومت کے لیے ایک بہت بڑ ا لمحہ فکر یہ سے کم نہیں کیونکہ اس سے اقتدار میں آنے سے پہلے عوام سے ان کو ریلیف دینے کے وعد ے اور دعو ے کئے مگر اقتدار میں آنے کے بعد یہ سب کچھ بھو ل کر ان کو فا قوں پر مجبو ر کر دیا۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*