حکومت اور شریف خاندان کے درمیان کوئی ڈیل نہیں ہوئی، شیخ رشید

وفاقی وزیر برائے ریلوے شیخ رشید نے حکومت اور شریف خاندان کے درمیان کسی سیاسی ڈیل کی قیاس آرائیوں کو مسترد کردیا اور کہا کہ لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے سے کسی کی نہ جیت ہوئی نہ ہی شکست ہوئی۔راولپنڈی سے اٹک جانے والی اسٹیم انجن سفاری ٹرین کا افتتاح کرتے ہوئے شیخ رشید نے کہا کہ ‘ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت ضمانتی بانڈ جمع کروائے بغیر نواز شریف کو بیرون ملک نہیں جانے دینا چاہتی تھی لیکن لاہور ہائی کورٹ نے انہیں ریلیف دیا جو دونوں جماعتوں میں سےکسی کی نہ جیت ہے نہ ہی ہار ہے’۔گزشتہ روز اسٹیم انجن سفاری ٹرین میں برطانیہ، جاپان، امریکا، اٹلی اور جرمنی سے آئے سیاحوں نے سفر کیا، ٹرین کا مقصد دنیا کو پاکستان کی ثقافت، تہذیب، ورثے اور خوبصورت مقام دکھانا ہے۔صحافیوں سے بات کرتے ہوئے شیخ رشید نے کہا ک نواز شریف کو بیرون ملک بھیجنے میں کسی نے کوئی کردار ادا نہیں کیا اور یہ صرف لاہور ہائی کورٹ کا فیصلہ ہے۔انہوں نے دعویٰ کیا کہ ملکی سیاسیت کے اچھے دن آئیں گے اور آئندہ برس 15 جنوری تک سیاسی منظرنامہ مکمل طور پر تبدیل ہوجائے گا۔شیخ رشید نے کہا کہ ‘ شریف خاندان کنجوس ہے وہ جب سعودی عرب گئے تھے تب بھی پیسے نہیں دیے تھے ، وہ حمزہ شہباز کو ضمانت کے طور پر چھوڑ گئے تھے’، انہوں نے مزید کہا کہ حکومت کو نواز شریف کو جانے دینا چاہیے۔وزیر ریلوے نے کہا کہ نواز شریف کے پلیٹلیٹس اسٹاک ایکسچینج کی طرح اوپر اور نیچے جارہے ہیں اور وہ کئی دن ایک تھرمامیٹر لے کر الیکٹرانک میڈیا پر موجود ہیں اور لوگوں کی توجہ ہٹارہے ہیں۔انہوں نے کہا سابق وزیراعظم نواز شریف علاج کے لیے 4 ہفتوں کے لیے بیرون ملک جائیں گے۔جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن کے دھرنے سے متعلق بات کرتے ہوئے شیخ رشید نے کہا کہ انہوں نے دھرنا ختم کرکےعقلمندانہ اور بروقت فیصلہ کیا کیونکہ اس سے انہیں کچھ حاصل نہیں ہوا۔شیخ رشید نے کہا کہ ‘ دھرنے کا وقت ٹھیک نہیں تھا، سیاست اور جنگ میں وقت اہم ہے، مولانا فضل الرحمٰن نے احتجاج کے لیے صحیح وقت کا انتخاب نہیں کیا’۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*