شام میں ترکی کی مداخلت داعش کو اکٹھا کرنے کا سبب بن سکتی ہے، پیوٹن کا انتباہ

ماسکو(آئی این پی) روسی صدر ولادیمیر پیوٹن نے خبر دار کیا ہے شمال مشرقی شام میں حراست میں لئے گئے داعش کے عسکریت پسند وہاں پر ترک فوج کارروائی کے نتیجے میں فرار ہوسکتے ہیں جس کی وجہ سے داعش دوبارہ سر اٹھا سکتی ہے۔تفصیلات کے مطابق صدر پیوٹن نے یہ بات سابق سوویت یونین کے سربراہان سے ترکمانستان کے دارالحکومت میں گفتگو کرتے ہوئے کہی۔ انہوں نے کہا کہ مجھے یقین نہیں ہے کہ ترکی اس صورتحال پر قابو پا سکتا ہے یا نہیں۔ولادی میر پیوٹن نے کہا کہ مجھے یقین نہیں ہے کہ ترکی شمالی شام میں کرد فورسز کے خلاف کارروائی کے دوران کرد جیلوں میں قیدہزاروں داعشی دہشت گردوں کے فرار کو روک سکتا ہے۔روسی صدر کا کہناتھا کہ یہ ایک ایسا علاقہ ہے جہاں داعش کے خطرناک جنگجوں کو قید کیا جاتا ہے، وہ اب بھی کرد مسلح گروہوں کی حراست میں ہیں۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*