چین اپنی سفارتکاری میں پاکستان کوترجیح دیتا ہے،چینی صدر

بیجنگ(آئی این پی ) چینی صدر نے پاکستان کی خود مختاری اور علاقائی سالمیت کی غیر متزلزل حمایت کا اعادہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ چین کشمیر کی صورتحال پر توجہ دیتا ہے،متعلقہ امور واضح ہیں،امید ہے کہ متعلقہ فریقین پرامن بات چیت سے تنازعات کو حل کریں گے،عالمی و علاقائی صورتحال میں خواہ کیسی بھی تبدیلیاں آئیںچین اور پاکستان کی دوستی ہمیشہ سے چٹانوں کی طرح مضبوط اور اٹوٹ ہے،چین پاکستان کے ساتھ مل کر نئے عہد میں مزید ہم آہنگی کے ساتھ ہم نصیب معاشرے کی تشکیل پر تیار ہے، چین ہمیشہ سے اپنی سفارت کاری میں پاکستان کوترجیح دیتا ہے، پاکستان کے بنیادی مفادات اور اہم خدشات سے متعلق معاملات پر پاکستان کی بھرپور حمایت کرتا رہے گا،دوست پاکستان نے مشکل وقت میں چین کی بے لوث مدد کی ،اب چین مخلص دوست کی مزید تیز اور بہتر ترقی کے لیے مدد فراہم کرنا چاہتا ہے، دہشت گردی کے خلاف پاکستان کی کوششوں کو خراج تحسین پیش کرتا ہے اور پاکستان کی بھرپور حمایت کرتا ہے جبکہ وزیر اعظم عمران خان نے کہا پاکستان کو چین کے حاصل کردہ ترقیاتی ثمرات کی دلی خوشی ہے،پاکستان چین کے ساتھ تبادلے ، صلاح و مشورے اور تعاون کو مضبوط بنانا چاہتا ہے،سی پیک کی تعمیر کو بھرپور انداز میں آگے بڑھانے پر تیار ہے،پاکستان انسداد دہشت گرد ی کی کارروائیوں پرعمل درآمد کے سلسلے میں پر عزم ہے ،کشمیر کی صورتحال کے قابو سے با ہر ہو نے سے گریز کیا جائے۔زیر اعظم عمران خان اور چینی صدر شی جنگ پنگ کے درمیان ہونے والی ملاقات کے بعد جاری کردہ اعلامیے کے مطابق چینی صدر نے وزیراعظم عمران خان اور وفد کے اعزاز میں ظہرانہ دیا، آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کے علاوہ وزیرخارجہ، وزیر منصوبہ بندی، وزیرریلوے، مشیر تجارت اور ڈی جی آئی ایس آئی بھی وزیراعظم کے ہمراہ تھے، دونوں رہنماوں نے خوشگوار ماحول میں دوطرفہ تعلقات، خطے کی صورتحال اور بین الاقوامی مسائل پر بات چیت کی۔ دونوں رہنماں نے باہمی تعلقات مزید مضبوط اور اور وسیع تر کرنے پر اتفاق کیا۔ملاقات کے دوران وزیراعظم عمران خان نے چینی صدر کو مقبوضہ کشمیر میں بھارتی جارحیت سے آگاہ کیا مقبوضہ وادی میں انسانی حقوق کی بدترین پامالی کی جارہی ہے، دو ماہ سے لاکھوں کشمیریوں کے مسلسل لاک ڈان نے انسانیت سوز صورتحال پیدا کر رکھی ہے، خطے میں امن کے لیے مقبوضہ کشمیر سے کرفیو فوری ہٹایا جائے۔وزیر اعظم نے کہا کہ چین پاکستان کا آئرن برادر، ثابت قدم اتحادی اور شراکت دار ہے، چین نے ہمیشہ قومی مفادات پر پاکستان کا بھرپور ساتھ دیا، پاکستان چینی مفادات پراس کی بھرپور حمایت کرتا رہے گا، چین پاکستان کی اقتصادی ترقی اور اہداف کے حصول میں اہم کردار ادا کررہا ہے، چینی صدر کا بیلٹ اینڈ روڈ منصوبہ پاکستان اور خطے کی اقتصادی صورتحال میں تبدیلی اور خوشحالی لائے گا، سی پیک منصوبوں کی بروقت تکمیل ہماری حکومت کی اولین ترجیح ہے۔ اس موقع پر چینی صدر شی جن پنگ نے کہا کہ چین اور پاکستان چاروں موسموں کے بے مثال، اسٹریٹجک شراکت دار ہیں ۔عالمی و علاقائی صورتحال میں خواہ کیسی بھی تبدیلیاں آئیں، چین اور پاکستان کی دوستی ہمیشہ سے چٹانوں کی طرح مضبوط اور اٹوٹ ہے۔ انہوں نے کہا چین پاکستان تعاون میں ہمیشہ سے ایک گرم جوشی رہی ہے،چین پاکستان کے ساتھ مل کر نئے عہد میں مزید ہم آہنگی کے ساتھ ہم نصیب معاشرے کی تشکیل پر تیار ہے۔شی جن پنگ نے کہا کہ چین ہمیشہ سے اپنی سفارت کاری میں پاکستان کوترجیح دیتا ہے اور پاکستان کے بنیادی مفادات اور اہم خدشات سے متعلق معاملات پر پاکستان کی بھرپور حمایت کرتا رہے گا۔شی جن پنگ نے نشاندہی کی کہ چین اور پاکستان کے درمیان باہمی امداد کی اچھی روایت موجود ہے۔دوست، پاکستان نے مشکل وقت میں چین کی بے لوث مدد کی تھی۔اب چین نے ترقی کی ہے اور چین اپنے مخلص دوست پاکستان کی مزید تیز اور بہتر ترقی کے لیے مدد فراہم کرنا چاہتا ہے۔انہوں نے کہا کہ فریقین کو سی پیک کی تعمیر کو اعلی معیار کے ساتھ آگے بڑھاتے ہوئے سی پیک کو دی بیلٹ اینڈ روڈ کا مثالی منصوبہ بنانا چاہیئے۔چین دہشت گردی کے خلاف پاکستان کی کوششوں کو خراج تحسین پیش کرتا ہے اور پاکستان کی بھرپور حمایت کرتا ہے۔فریقین کو اقوام متحدہ اور شنگھائی تعاون تنظیم سمیت کثیرالطرفہ نظام میں رابطے اور تعاون کو مضبوط بناتے ہوئے علاقائی امن و امان کا تحفظ کرنا چاہیئے۔شی جن پنگ نے عوامی جمہوریہ چین کے قیام کی سترویں سالگرہ کے موقع پر پاکستان کی جانب سے بھیجے گئے پرخلوص پیغام کا شکریہ ادا کیا۔شی جن پھنگ نے کہا کہ چین کشمیر کی صورتحال پر توجہ دیتا ہے اور متعلقہ امور واضح ہیں۔چین پاکستان کی جانب سے اپنے قانونی حقوق و مفادات کے تحفظ کی کوشش کی حمایت کرتا ہے اور امید ہے کہ متعلقہ فریقین پرامن بات چیت سے تنازعات کو حل کریں گے۔ چائنہ ریڈیو کے مطابق پاکستانی وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ پاکستان کو چین کے حاصل کردہ ترقیاتی ثمرات کی دلی خوشی ہے۔پاکستان چین کے ساتھ تبادلے ، صلاح و مشورے اور تعاون کو مضبوط بنانا چاہتا ہے اور سی پیک کی تعمیر کو بھرپور انداز میں آگے بڑھانے پر تیار ہے۔پاکستان انسداد دہشت گرد ی کی کارروائیوں پرعمل درآمد کے سلسلے میں پر عزم ہے ۔عمران خان نے کشمیر کی صورتحال کے حوالے سے پاکستان کے خیالات سے آگاہ کرتے ہوئے اپیل کی کہ صورتحال کے قابو سے با ہر ہو نے سے گریز کیا جائے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*