ہندوستان 2003کے جنگ بندی معاہدے کی پاسداری کرے،ترجمان دفتر خارجہ

Dr faisal spokperson

اسلام آباد(آئی این پی)ڈائریکٹر جنرل جنوبی ایشیاو سارک ڈاکٹر محمد فیصل نے بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر گوراو اہلووالیا کو منگل کو دفتر خارجہ طلب کیا اور چھ اور سات اکتوبر دو ہزار انیس کو قابض بھارتی افواج کی جانب سے لائن آف کنٹرول (ایل اوسی) پر جنگ بندی کی بلااشتعال خلاف ورزیوں کی مذمت کی۔ ایل او سی کے چری کوٹ سیکٹرمیں بھارتی فوج کی بلااشتعال فائرنگ کے نتیجے میں انہتر برس کی معمر خاتون ناظرہ بیگم زوجہ محمد حسین سکنہ ککوٹہ شہید ہوگئیں جبکہ تین عام شہری منظور ولد اشرف عمر تینتالیس سال، جمیل ولد مصری عمر چالیس سال اور مشتاق ولد غلام محمد عمر چھیالیس سال سکنہ گاوں ککوٹہ شدید زخمی ہوگئے۔ قابض بھارتی افواج ایل او سی اور ورکنگ باونڈری کی مسلسل خلاف ورزیاں کرتے ہوئے آرٹلری، بھاری اور خودکار ہتھیاروں کے ذریعے عام شہری آبادیوں کو نشانہ بنارہی ہیں۔ دوہزار سترہ میں بھارت نے ایک ہزار نوسو ستر مرتبہ جنگ بندی کی خلاف ورزیوں کا ارتکاب کیا اور اس وقت سے جنگ بندی کی خلاف ورزیوں کا سلسلہ جاری ہے۔دانستہ شہری آبادیوں کو نشانہ بنانا انتہائی قابل افسوس، انسانی عظمت ووقار، عالمی انسانی حقوق اور بین الاقوامی انسانی قوانین کے صریحا منافی ہے۔ بھارت کی جانب سے جنگ بندی کی ان خلاف ورزیوں سے علاقائی امن و سلامتی کو سنگین خطرات لاحق ہیں جس کا نتیجہ سٹرٹیجک غلطی کی صورت نکل سکتا ہے۔ڈائریکٹر جنرل (جنوبی ایشیاوسارک)نے بھارت پر زوردیا کہ دوہزار تین کے جنگ بندی معاہدے کی پاسداری کرے، جنگ بندی کی خلاف ورزیوں کے ان واقعات کی تحقیقات کرائے، بھارتی فوج کو جنگ بندی کے احترام کا حکم دے، ایل او سی اور ورکنگ باونڈری پر اس کی روح کے مطابق امن برقرار رکھے۔ انہوںنے زوردیا کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قرار دادوں کے مطابق بھارت اقوام متحدہ کے فوجی مبصرین (یواین ایم او جی آئی پی)کو اپنا کردارادا کرنے کی اجازت دے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*