انڈین وزارت داخلہ مقبوضہ کشمیر کی بگڑتی صورتحال سے بے خبر نکلی

نئی دہلی(م ڈ ) بھارتی وزارت داخلہ کے پاس اگست میں مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کو ختم کرنے کے بعدجموں و کشمیر میں ٹیلی مواصلات اور انٹرنیٹ پر پابندیوں، ریڈیو اور سیٹلائٹ ٹیلی ویژن کی سہولیات کی معطلی، سیاحوں کی بے دخلی اور سیاسی رہنماﺅں اور کارکنوں کو حراست میں لینے کے کسی بھی احکامات کے بارے میں معلومات نہیں ہے، اسے حراست میں لیے گئے افراد کے ناموں اور ان کے مقامات کے بارے میں کوئی معلومات نہیں ہے ۔ تفصیلات کے مطابق ایک شہری وینکٹیش نائک کی طرف سے معلومات کے حصول کے حق ( آر ٹی آئی)کے تحت ایک دائر کی گئی درخواست کے جواب میں ، وزارت داخلہ کے جموں و کشمیر ڈویژن کے دو مرکزی انفارمیشن افسروں نے کہا کہ ان کے پاس کوئی معلومات دستیاب نہیں ہیں۔وزارت نے کہا ، “یہ معلومات ریاست جموں و کشمیر کی ریاستی حکومت کے پاس دستیاب ہوسکتی ہے۔”تاہم آر ٹی آئی کی درخواست جموں وکشمیر حکومت کو نہیں ارسال کی جاسکی کیونکہ ریاست میں آر ٹی آئی ایکٹ 2005 لاگو نہیں ہے۔جس کے مطابق یہ اختیار صرف ریاست کے مکینوں کے لئے دستیاب ہے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*