حب ،صنعتی زون میں دوطرفہ سٹرک کا سنگ بنیاد

وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے گزشتہ روز اپنے حب کے دورے کے موقع پر صنعتی زون میں دوطرفہ سڑک کا سنگ بنیاد رکھ دیاہے ۔اس موقع پر میڈیا سے بات چیت میں انہوں نے اعلان کیا کہ حب میں سپیشل صنعتی زون قائم کیا جارہا ہے جس میں ابتدائی طور پر ایک سو صنعتیں لگائی جائینگی جس سے ملکی معیشت میں اضافے کے ساتھ ساتھ مزدور طبقہ کوروز گار ملے گا۔ انہوں نے مزید کہا آئندہ سال کی پی ایس ڈی پی میں صنعتی ترقی کےلئے خصوصی فنڈز رکھے جائیں گے۔ بلوچستان میں مالی وسائل کے اضافے کےلئے اقدامات کئے جارہے ہیں ۔
وزیراعلیٰ بلوچستان جام کما ل خان کا حب میں صنعتی زون میں دوطرفہ سڑک کا سنگ بنیاد قابل تعریف اقدام ہے اس سے حب صنعتی زون میں سے مال لانے اور لے جانے میں بڑی آسانی ہوگی کیونکہ فیکٹریوں سے مال لانے اور لے جانے کی جب سہولت ہوتو اس کا بہت بڑا فائدہ ہوتا ہے جہاں تک حب میں سپیشل صنعتی زون کے قیام کی بات ہے تو یہ بلوچستان کی خوشحالی کی بات ہے کیونکہ اس میں ایک سو بیس صنعتیں قائم کی جائیں گی تو اس میں ہزاروں افراد کو روزگار ملے گا کیونکہ اس وقت میں بےروزگار ی اپنے عروج پر ہے نوجوانوں کی ایک بڑی تعداد بےروزگار ہے اس سے ان کی ایک بڑی کھپت کو روزگار مل جائے گا۔ اس کا ملکی معیشت پر بھی بڑا اچھا اثر پڑے گا کیونکہ مجوزہ صنعتوں سے جو ٹیکس حاصل ہوگا وہ معیشت کی بہتری میں اہم کردار ادا کرے گا جو صوبے میں ترقی کےلئے کارگر ثابت ہوسکتا ہے کیونکہ بلوچستان میں بدقسمتی سے سوائے حب کے کہیں اور کوئی صنعتی زون نہیں ہے جس کی وجہ سے صوبے پسماندگی کا شکار ہے یہاں کے نوجوان ملاز مت کےلئے صرف صوبائی حکومت کی جانب دیکھتے ہیں لیکن افسوس کی بات یہ ہے کہ بلوچستان میں ہزاروں خالی آسامیاں پڑی ہیں حکومت ان پر بھرتی نہیں کروارہی جوکہ یقینا یہاں کے نوجوانوں کےلئے ادا سی کا سبب ہے ۔
ہم سمجھتے ہیں کہ بلوچستان حکومت کو حب کے ساتھ ساتھ صوبائی دارالحکومت کوئٹہ ،خضدار، لورلائی ،ژوب اور دیگر بڑے شہروں میں بھی صنعتی زونز بنانے کے اقدامات کرنے چاہئیں کیونکہ ہمارے صوبے کے سرمایہ دار کراچی اور دیگر صوبوں میں سرمایہ کاری کرتے ہیں لیکن وہ اپنے صوبے میں ایسا نہیں کررہے جو کہ صوبے اور اس کے بیروزگار لوگوں کے ساتھ زیادتی کے مترادف اقدام ہے۔ ان سرمایہ کاروں کو اپنے صوبے میں سرمایہ کاری کرکے صوبے کو ملک کے دیگر صوبوں کے برابر لانے کےلئے اقدامات کرنے چاہئیں کیونکہ سندھ اور پنجاب میں بڑی بڑی صنعتیں قائم ہیں جس کا فائدہ وہاں کی حکومتوں کے ساتھ ساتھ عوام کو بھی حاصل ہے ۔
امید ہے کہ وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے آئندہ سال کی پی ایس ڈی پی میں صنعتی ترقی کےلئے خصوصی فنڈز رکھنے سے بلوچستان میں صنعتی زونز قائم ہونگے جس سے مالی وسائل میں اضافہ ہوگا ۔
امید ہے کہ وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان اپنی قائدانہ صلاحیتوں کو بروئے کار لاکر صوبے میں ترقی کرکے اسے ملک کے دیگر صوبوں کے برابر لانے میں اہم کردار ادا کرینگے جوکہ یقینا ان کا تاریخی اقدام ہوگا۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*