حب کو پلانٹ کا 1320میگاواٹ بجلی پیدوار شروع کرنے کا اعلان

حب کو پلاور پلانٹ نے 1320میگاواٹ بجلی کی پیداوار شروع کرنے کا اعلان کردیا جس کے مطابق پلانٹ یکم اگست سے پروڈکشن کا آغاز کردے گا ۔علاقہ کی ترقی اور فلاح و بہبود کےلئے کام کئے جارہے ہیں جبکہ چائناپاور جنریشن نے کنڈ گڈانی میں تین کروڑ روپے کی لاگت سے جیٹی بھی تیار کی ہے جو ماہی گیروں کےلئے بہترین تحفہ ہے۔ ماہی گیروں سمیت مضافاتی علاقوں میں بچوں کی تعلیم صحت کےلئے ادارے قائم کئے جارہے ہیں جس سے نمایاں تبدیلی ہوتی نظر آئے گی ۔یہ بات حب کو پاور پلانٹ کے وائس پریذنڈنٹ لیگل اینڈ کواپریٹ آفیسر امبرین شاہ نے گزشتہ روز ایک افطار ڈنر سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔
حب کو پاور پلانٹ کا یکم اگست سے پروڈکشن کے آغاز کا اعلان بلاشبہ خوش آئند ہے۔ اس سے 1320میگاواٹ بجلی کی پیداوار شروع ہوجائے گی جوکہ یقینا نہ صرف علاقے بلکہ پورے بلوچستان کےلئے فائدہ ثابت ہوگی کیونکہ اس وقت بلوچستان کے اکثر علاقوں میں کئی کئی گھنٹوں کی لوڈ شیڈنگ ہورہی ہے بلکہ بعض علاقوں میں وولٹیج کم ہونے کی بھی شکایات عام ہیں جس کیو جہ سے عوام کو خصوصاً گرمیوں کے موسم میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے صوبے کے کچھ ایسے علاقے بھی ہیں جہاں بجلی چند گھنٹوں آتی ہے اس کے علاوہ کوئٹہ سمیت دیگر شہروں میں 6سے 8گھنٹے تک لوڈ شیڈنگ ہوتی ہے ۔
اب مذکورہ پاور پلانٹ سے 1320میگاواٹ بجلی کی پیداوار یقینا بجلی کی کمی کو کافی حد تک پورا کرنے میں بڑی مدد دے گی ۔اس سے بجلی کی لوڈ شیڈنگ سے متاثر ہونے والے عوام کو بجلی میسر ہوسکے گی ۔خصوصاً حب جو بلوچستان کا صنعتی شہر ہے اس شہر میں صنعتوں سے کافی لوگوں کو روزگار میسر ہے انکو بھی اس سلسلے میں استفادہ ملے گا۔ یہاں اس بات کا ذکر کرنا ضروری ہے کہ مذکورہ پلانٹ سے حاصل ہونے والی بجلی صرف بلوچستان کے علاقوں کو فراہم کی جائے تاکہ اس سے صوبے کے عوام بھر پور استفادہ حاصل کرسکیں اور جو ایک طویل عرصے سے لوڈ شیڈنگ کا سامنا کررہے ہیں اور اس سلسلے میں ان کو ریلیف مل سکے گا۔اس بجلی پر صرف بلوچستان کا حق ہے جو اسے ہر صورت ملنا چاہےے۔ اگر بلوچستان کا یہ حق بھی چھیننے کی کوئی کوشش کی گئی تو یہ غلط اقدام ہوگا۔
چائنا پاور جنریشن نے کنڈ گڈانی میں جو ماہی گیروں کےلئے جیٹی تیار کی ہے وہ بہت ہی قابل تعریف بات ہے ۔یہ بلوچستان کے ماہی گیروں کےلئے ایک بہت بڑا کارنامہ ہے جس سے بھر پور استفادہ حاصل کرتے ہوئے دو وقت کی روٹی بآسانی پیدا کرسکتے ہیں ۔
ہم سمجھتے ہیں کہ چائنا پاور جنریشن کے مذکورہ کارنامے بلوچستان کی عوام کےلئے ایک بہت بڑے تحفے سے کم نہیں ہے یہ بلوچستان کے عوام کے مسائل حل کرنے کی جانب ایک اہم قدم ہے جوکہ ان کی خوش قسمتی ہے۔ چین نے یہ کام کرکے پاکستان کا بہترین دوست ہونے کا حق اد ا کردیا ہے کیونکہ وہ ماہی گیروں کےلئے مضافاتی علاقوں میں بچوں کی تعلیم صحت کےلئے ادارے بھی قائم کررہا ہے ۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*