دہشتگردی کے عفریت کا مکمل صفایا کرنے کےلئے پر عزم ہیں ،عمران خان

کوئٹہ(سٹاف رپورٹر ) کوئٹہ کے سیٹلائٹ ٹاون کی منی مارکیٹ بم دھماکے میں شہید ہونے والے چاروں پولیس اہلکاروں کی نمازجنازہ پولیس لائن میں ادا کردی گئی جبکہ میتیں آبائی علاقوں میں تدفین کےلئے ورثاءکے سپرد کر دی گئی ہیں ۔ گزشتہ روزکوئٹہ کی منی مارکیٹ میں پولیس موبائل کے قریب دھماکے میں شہید چاروں اہلکاروں کی نمازجنازہ پولیس لائن میں ادا کردی گئی۔دھماکے کے شہید چاروں اہلکاروں غلام نبی، محمد اسحاق، ذوالفقار اور مشتاق شاہ کی میتیں نماز جنازہ کی ادائیگی کے بعد ورثا کے حوالے کردی گئیں۔ شہداء کی نمازجنازہ میں وزیراعلی بلوچستان جام کمال، صوبائی وزیر داخلہ میر ضیاءلانگو، آئی جی پولیس محسن حسن بٹ سمیت اعلی سول وعسکری حکام نے شرکت کی۔اس موقع پروزیراعلیٰ بلوچستان کا کہنا تھا کہ ایک گھناو¿نی سازش کے تحت صوبے اور ملک میں امن کی صورتحال خراب کرنے کی کوشش کی جارہی ہے، جس کا پوری قوت سے مقابلہ کیا جائے گا۔واضح رہے کہ گزشتہ روزمنی مارکیٹ میں مسجد کے باہرنمازیوں کی حفاظت کے لیے موجود پولیس وین کو امن دشمنوں نے نشانہ بنایا تھا جس کے نتیجے میں 4 پولیس اہلکارشہید ہوگئے تھے۔سیٹلائیٹ ٹاو¿ن بم دھماکے کا مقدمہ تاحال درج نہیں ہوا اور اس کے حوالے سے پولیس کا کہنا ہے کہ سیٹلائیٹ ٹاو¿ن تھانے سے مراسلے کے بعد سی ٹی ڈی حکام مقدمہ درج کریں گے۔ڈی آئی جی عبدالرزاق چیمہ کا کہنا ہے کہ دھماکا خیز مواد موٹر سائیکل پر نصب تھا اور دہشت گردوں کا نشانہ پولیس اہلکار تھے۔ادھر وزیراعظم عمران خان نے کوئٹہ میں پولیس موبائل کے قریب ہونے والے دھماکے کی مذمت کرتے ہوئے واقعے کی رپورٹ طلب کرلی۔وزیراعظم عمران خان نے گزشتہ روز کوئٹہ میں ہونے والے دہشت گردی کے واقعے کی شدید مذمت کرتے ہوئے رپورٹ طلب کی اور کہا کہ مقدس مہینے میں بےگناہ لوگوں کو نشانہ بنانے والوں کا کوئی مذہب نہیں۔انہوں نے کہا کہ بحیثیت قوم ہمارے حوصلے بلند ہیں اور ہم دہشت گردی کے عفریت کا مکمل صفایا کرنے کے لیے پ±رعزم ہیں۔وزیراعظم عمران خان نے شہید ہونے والے پولیس اہلکاروں کے لواحقین سے اظہار ہمدردی کرتے ہوئے شہدائ کے درجات کی بلندی کیلئے دعا کی اور زخمیوں کو بہترین طبی امداد کی فراہمی کی ہدایت بھی کی۔واضح رہے کہ گزشتہ شب کوئٹہ کے علاقے منی مارکیٹ میں پولیس موبائل کے قریب دھماکا ہوا جس کے نتیجے میں 4 پولیس اہلکار شہید جب کہ 2 پولیس اہلکاروں سمیت 11 افراد زخمی ہوئے جن میں سے دو کی حالت تشویشناک ہے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*