آئی ایم ایف کےساتھ اصولی طور پر اتفاق ہوگیا

اسلام آباد (این این آئی) وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر نے کہاہے کہ آئی ایم ایف کے ساتھ اصولی طورپر پروگرام پر اتفاق ہو گیا ہے ، مالیاتی ادارے کا وفد رواں ماہ کے آخر میں پاکستان آئیگا ،آئی ایم ایف سے 6 سے 8 ارب ڈالر کا معاہدہ ہوگا ،معاہدے کے بعد ساڑھے 7 ارب عالمی مالیاتی بینک سے آئیں گے ،ایشین ڈویلپمنٹ بینک سے آنیوالی امداد اس کے علاوہ ہوگی ،بجلی کی قیمتوں میں اضافے کی نئی تجویز نہیں ہے ،آئی ایم ایف سے معاہدے کی شرائط کا عام آدمی پر اثر نہیں پڑےگا ۔ پیر کو قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی خزانہ کا اجلاس چیئرمین فیض اللہ کی زیر صدارت ہوا جس میں وزیر خزانہ اسد عمر اور وزیر مملکت ریونیو حماد اظہر شریک ہوئے ۔ چیئر مین نے کہاکہ وزیر خزانہ اسد عمر اکنامک روڈ میپ پر کمیٹی کو بریفنگ دیں ۔ اسد عمر نے کہاکہ روڈ میپ کا مسودہ آپ لوگوں سے شیئر کر دیا ہے ،کوشش ہے کہ معاشی ایشوز پر مفاہمت ہو جائے۔ انہوںنے کہاکہ امریکہ سے صبح ہی واپس آیا،امریکہ میں عالمی بینک آئی ایم ایف سے ملاقات ہوئی۔ انہوںنے کہاکہ آئی ایم ایف کے ساتھ اصولی طور پر پروگرام پر اتفاق ہو گیا۔انہوںنے کہاکہ آئی ایم ایف کا اسٹاف مشن رواں ماہ کے آخر میں آئےگا۔ انہوںنے کہاکہ آئی ایم ایف کے ساتھ پالیسی معاملات طے پاچکے ہیں، بجلی کی قیمتوں میں اضافے کی نئی تجویز نہیں ہے ۔اسد عمر نے کہاکہ سابقہ حکومت نے توانائی کے شعبہ میں ایک سال میں 600 ارب روپے کا خسارہ کیا ،یہ خسارہ کہیں نا کہیں سے پورا کرنا ہے ۔ بعد ازاں میڈیا سے بات چیت کے دور ان وزارت سے ہٹانے سے متعلق سوال پر اوزیر خزانہ نے کہاکہ ہزاروں خواہشیں ایسی کہ ہر خواہش پہ دم نکلے۔ انہوںنے کہاکہ امریکہ میں ایف اے ٹی ایف کے صدر سے ملاقات ہوئی۔ انہوںنے کہاکہ میں نے بھارت کے رویے بارے اپنے خدشات ظاہر کیے ہیں ۔انہوںنے کہاکہ ایف اے ٹی ایف کےصدر نےیقین دہانی کرائی کہ فیصلے تکنیکی بنیادوں پرہوںگے سیاسی بنیادوں پرنہیں ۔انہوںنے کہاکہ ہم نے بھارت کی جانب داری کے بارے میں دوبارہ اعتراض اٹھائے ۔انہوںنے کہاکہ آئی ایم ایف سے 6 سے 8 ارب ڈالر کا معاہدہ ہوگا ۔انہوںنے کہاکہ آئی ایم ایف سے معاہدے کے بعد ساڑھے 7 ارب عالمی مالیاتی بینک سے آئیں گے۔انہوںنے کہاکہ ایشین ڈویلپمنٹ بینک سے آنیوالی امداد اس کے علاوہ ہوگی ۔انہوںنے کہاکہ آئی ایف سی سے بھی فنڈ دستیاب ہوں گے انہوںنے کہاکہ پاکستان کے زرمبادلہ ذخائر میں اضافہ ہوگا ۔اسد عمر نے کہاکہ پاکستان جلد ہی بانڈ جاری کرے گا ۔انہوںنے کہاکہ پیر کی شام ایف اے ٹی ایف کو ان کی سفارشات پر عملدرآمد کا مسودہ بھجوایا جائیگا ۔ انہوںنے کہاکہ مسودے پرعملدرآمد کا جائزہ لینے کیلئے ایف اےٹی ایف کا وفد مئی کے تیسرے ہفتے میں پاکستان آئیگا۔انہوںنے کہاکہ آئی ایم ایف سے معاہدے کی شرائط کا عام آدمی پر اثر نہیں پڑےگا ۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*