بلوچستان میں دشمن دہشتگردی پھیلا کر انتشار پیدا کرنا چاہتا ہے ، سردار یار محمد رند

Sardar Yar Muhammad Rind

کوئٹہ (این این آئی)وزیراعظم کے معاون خصوصی پاکستان تحریک انصاف کے صوبائی صدر سردار یار محمد رند نے کہا ہے کہ بلوچستان میں دشمن دہشتگردی پھیلا کر انتشار پیدا کرنا چاہتا ہے ، دھرنے میں بےٹھے لوگوں کو سڑکیں جام کرنے کی بجائے دہشتگردی کے خاتمے میں حکومت کی مدد کر نی چاہےے ،دشمن ہمیں استحکام کی جانب نہیں جا نے دینا چاہتا، سابقہ حکمرانوں نے وسائل کو بری طرح لوٹا ،چ،سیف سٹی منصوبے کو خودکاربنایا جائے امید ہے وزیراعلیٰ جام کمال اس منصوبے کو بہتر انداز میں تکمیل تک لے کر جائےں گے ، یہ بات انہوں نے اتوار کو کوئٹہ کے سول ہسپتال کے ٹراما سےنٹر میںہزار گنجی اور چمن دھماکوں کے زخمیوں کی عیادت کے بعد میڈیا سے گفتگو کر تے ہوئے کہی ، اس موقع پر رکن صوبائی اسمبلی مبین خلجی، سابق صوبائی وزیر میر عامر رند ،پی ٹی آئی کے رہنماءنوابزادہ شریف جوگیزئی ،نوابزادہ امین اللہ رئےسانی ،بابر یوسفزئی سمیت دےگر بھی انکے ہمراہ تھے، وزیراعظم کے معاون خصوصی سردار یار محمد رند نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان نے کوئٹہ اور چمن میں دھماکوں کا سنجےدگی سے نوٹس لیا ہے انہوں نے دھماکوں کے زخمیوں کے لئے جلدصحت یابی اور شہداءکے لواحقین کے ساتھ اظہار ہمدردی کا پیغام دیا ہے وزیراعظم دھماکے روز سے حکام سے مسلسل رابطے میں ہیں دھماکوں کی تحقیقات کے لئے تمام اداروں کو مشترکہ طور پر شامل کیا گیا ہے ، سردار یار محمد رند نے کہا کہ ہم انتہائی نازک دور سے گزر رہے ہیں پاکستان استحکام کی جانب جا رہا تھا کہ اچانک دو واقعات ہوئے جب آپ استحکام اور خوشحالی کی طرف جاتے ہیں تو دشمن ترقی اور خوشحالی کے سفر کو روکنے کے لئے ایسے واقعات کرواتے ہیں لیکن ہم ان تمام واقعات کا مقابلہ کر نے کے لئے تیارہیں اور نہ ہی ہمیں اےسے واقعات سے مرعوب کیا جا سکتا ہے ہم نے ماضی میں بھی دہشتگردی کا بہادری سے سامنا کیا ہے اور اب بھی کریں گے ،انہوں نے کہا کہ جب تک ہم آپس میں اتفاق و اتحاد نہیں کر تے ہم دشمن کو ناکام نہیں بنا سکتے ، ہمیں یہ فیصلہ کرنا ہے کہ ایک طرف وہ راستہ ہے کہ جہاں ہم نے دشمن سے لڑنا ہے اور دوسرا راستہ یہ ہے کہ ہم صرف رو سکتے ہیں ےقےنا ہم بہادری سے لڑیں گے انشاءاللہ ایک دن ہم امن واستحکام حاصل کرنے میں کامیاب ہونگے ،ایک سوال کے جواب میں سردار یار محمد رند نے کہا کہ دھرنے میں بےٹھے مظاہرین سے مذاکرات کے حوالے سے اپنے اتحادیوںسے رابطے میں ہیں ان سے مشاورت کے بعد مشترکہ لائحہ عمل طے کریں گے جبکہ صوبائی حکومت سے بھی اس حوالے سے رابطہ کریں گے ،انہوں نے کہا کہ مکمل سکیورٹی امریکہ اور یورپ میں بھی نہیں ہے جو لوگ دھماکے کرتے یا کرواتے ہیں وہ ہمارے دشمن ہیں ،کیا اس میں صرف ایک طبقہ متاثر ہے ؟ دھماکے میں ایف سی کے جوان ، بلوچ ، پشتون ،سیٹلر سب متاثر ہوئے ہیں ،دھرنا دےنے والوں کو چاہےے کہ مشترکہ طور پر دشمن کا مقابلہ کر نے کے لئے سکیورٹی فورسز اور حکومت کے ساتھ کھڑے ہوں ، انہوں نے کہاکہ سپریم کورٹ ایک ایک واقعہ کا نوٹس نہیں لیتی ، اگر کوئی سپریم کورٹ جانا چاہے تو جا سکتاہے لیکن یہ مسئلہ کا حل نہیں ہےحکومت نے تمام اداروں کو ہزار گنجی دھماکے کی تحقیقات کے لئے لگا دیا ہے جلد ہی واقعہ میں ملوث عناصر قانون کے شکنجے میں ہونگے اور انہیں کیفر کردار تک پہنچایا جائےگا ،انہوں نے مزید کہا کہ دشمن یہی چاہتا ہے کہ اسکی ایک کاروائی سے پورا بلوچستان اور پاکستان منجمد ہو جائے تاکہ وہ منفی پیغام پوری دنیا میںدے سکے ،ہمیں دشمن کو چیلج کرنا چاہےے اور تمام برداریوں کو ملکر مشترکہ کمےٹیاں بنانی چاہےےں جو ہر قسم کی مشکوک نقل و حرکت کی اطلاع قانون نافذ کرنے والے اداروں کو دیں، انہوں نے کہاکہ نصیرآباد کے جلسے میں وزیراعظم نے عوام سے وعدہ کیا تھا کہ کچھی کینال فیز 2 اور فیز 3 بنایا جائےگا انشاءاللہ ہم ہمسایہ ملک کے ساتھ رابطے میں ہیں انہیںکچھی کینال پر کام اور سرمایہ کاری کو دعوت دی ہے ساتھ ہی ہم کینا ل کے علاقے میں زمین لیز پر بھی دینا چاہتے ہیں تاکہ معاشی صورتحا ل کو بہتر بنا یا جاسکے، عوام جلد ہی فیز 2اور فیز 3پر کام کی خوش خبری سنیں گے ،انہوں نے کہا کہ سابقہ حکمرانوں نے وسائل کو بے دردی سے لوٹاہے ،ہم نے صورتحال پر مشکل سے قابو پایا ہے ۔ایک سوال کے جواب میں انکا کہنا تھا کہ سیف سٹی منصوبے پر صوبائی حکومت کام کر رہی ہے خواہش ہے کہ سیف سٹی صرف کےمرے نہیں بلکہ اس میں جدید خودکار نظام بھی نصب کیا جائے جو مشکوک لوگوں کو بھی سکین کرے، ایسا نہ ہو اربوں روپے ضائع نہ ہوں مجھے یقین ہے جام صاحب منصوبے کو بہتر انداز میں چلائےں گے

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*