بلوچستان کا اس وقت ایک اہم اور بنیادی مسئلہ بےروزگاری ہے،سردار اختر مینگل

sardar akhtar mengal

اسلام آباد +کوئٹہ(این این آئی) بلوچستان نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر رکن قومی اسمبلی سردار اختر جان مینگل کی قیادت میں ڈپٹی سیپکر قومی اسمبلی قاسم خان سوری رکن بلوچستان اسمبلی واجہ ثنا بلوچ رکن قومی اسمبلی محمد ہاشم نوتیزئی نے وفاقی وزیر پلاننگ اینڈ ڈوپلمنٹ مخدوم خسرو بختیار سے ملاقات کی اس موقع پر وفد نے بلوچستان پسماندگی اور سابق حکمرانوں کی عدم توجہیی سے متعلق آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ وسیع عریض بلوچستان کے لوگ آج کے اس تیز رفتار ترقی کے دور میں بھی پتھر کے زمانے میں رہ رہے ہیں اب بھی پختہ سڑک ،پینے کے صاف پانی ، صحت اور تعلیم کی بنیادی سہولیات کا فقدان ہے ہم بھی ترقی یافتہ اور خوشحال قوموں کے شانہ بشانہ سفر کے خواہش مند ہیں مگر ہمارے دیہات اب بھی شہروں سے لاتعلق ہے ہمارے لوگوں کی زندگیاں اب بھی کسی مسیحا تک رسائی سے پہلے دم توڑ دیتی ہیں آخر کب تک ہم اپنی ان سسکتی سانسوں کو قسمت کافیصلہ سمجھ کر قبول کرتے رہیں گے ، وفد نے مزید کہا کہ وفاقی حکومت کو بلوچستان کے احساس محرومی دور کرنے کے لیے سنجیدہ اور دیرپا حکمت عملی کی ضرورت ہے بلوچستان کو موجودہ معاشی اور سماجی ترقیاتی منصوبوں میں سر فہرست رکھا جائے بلوچستان کا اس وقت ایک اہم اور بنیادی مسئلہ بے روزگاری ہے نوجوان ڈگریاں لینے کے بعد روزگار کے لیے در در کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور صوبائی حکومت سے مکمل طور پر مایوس نظر آتی ہے اس حوالے سے جامع منصوبہ بندی کے تحت نوجوانوں کے لیے وسیع تر روزگار کے ذرائع پیدا کرنا حکومت وقت کی ذمہ داری ہے انہوں نے کہا کہ بلوچستان میں اہم تجارتی شاہراہیں ٹھوٹ پھوٹ کا شکار ناقابل سفر ہیں خاص طور پر تفتان تا کوئٹہ ،کوئٹہ تا کراچی اور احمد وال تا خاران روڈ انتہائی خستہ حال ہیں جس سے لوگوں کو آمد رفت میں شدید مشکلات کا سامناہے خاص طور پر خضدار بیلہ خاران واشک نوشکی نوکنڈی چاغی میں نئے گریڈ اسٹیشن سمیت ٹرانسمیشن لائن کی اشد ضرورت ہے انہوں نے کہا کہ بلوچستان کو ترقی کی شاہراہ پر گامزن کرنے کے لیے محض اعلانات نہیں بلکہ عملی اقدامات کی ضرورت ہے

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*