حکومت کہیں نہیں جارہی ، آصف زرداری جیل جانےوالے ہیں، وزیراعظم

خیبر(نیوز ایجنسیاں) وزیراعظم عمران خان نے چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری اور آصف علی زرداری کو اسلام آباد آ کر دھرنا دینے کی پیشکش کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کہیں نہیں جارہی لیکن آصف زرداری جیل جانے والے ہیں،ملک سخت معاشی مشکلات سے دوچارہے، چند ماہ میں مشکل مرحلے سے نکل آئیں گے، جعلی اکا ﺅ نٹس میں آصف علی زرداری کا کم از کم 100 ارب روپے ہیں،یہ ہم پر دباﺅ ڈال رہے ہیں کہ کسی طرح این آر او دے دیں، کنٹینر کی صفائی کریں، یہ اسلام آباد آئیں اور ایک ہفتہ گزار کر دکھا دیں، انہیں کھانا بھی دیں گے، آصف زرداری دھرنا تب کامیاب ہوتا ہے جب آپ عوام کے لیے کھڑے ہوتے ہیں، جو شخص پرچی دکھا کر کہے کہ پارٹی وراثت میں مل گئی تو وہ کبھی لیڈر نہیں بن سکتا، لیڈر جدوجہد کر کے بنتا ہے، ہر دوسرے دن مولانا فضل الرحمان ملین مارچ کی بات کرتے ہیں۔جمعہ کو وزیراعظم عمران خان نے عوامی جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ 1998میں قبائلی علاقے کے عوام نے کشمیریوں کا بھرپور ساتھ دیا، قبائل میں آپرینش کے دوران نقل مکانی کرنے والوں کی تکلیف سے واقف ہوں، قبائلی علاقے کے لوگوں نے انسداد دہشت گردی کی جنگ میں بے مثال قربانیاں دیں، یقین دلاتا ہوں کہ قبائلی علاقوں کے نقصانات کا ازالہ کریں گے، قبائلی علاقوں کے نوجوانوں کےلئے روزگار کےلئے اقدامات کررہے ہیں، ہدایت کی ہے کہ طورخم بارڈر 24گھنٹے کھلا رہے، افغان عوام کو اپنا بھائی سمجھتے ہیں، افغانستان میں امن کےلئے دل سے دعا کرتا ہوں، 40سال سے جاری جنگ کی تباہی کو اب افغانستان میں بند ہونا چاہیے، گزشتہ 15سال کے دوران ہم نے امریکیوں کی جنگ لڑی، افغانستان میں امن ہو گا تو قبائلی علاقوں سمیت سب کا فائدہ ہو گا، ہاتھ اٹھا کر دعا کرتا ہوں کہ افغانستان کے لوگوں کو امن ملے، ایک بھائی اپنے تجربے سے دوسرے بھائی کو مشورہ دے رہا ہے، افغان عوام نیوٹرل امپائر سے الیکشن کرائیں تا کہ وہ نتیجہ مانیں،افغانستان کے لوگ الیکشن نتائج نہیں مانتے تو دوبارہ انتشار ہو گا، ہم افغانستان کے خیرخواہ ہیں، تجارت سے دونوں ملکوں کا فائدہ ہو گا،علاقے میں پینے کے پانی کا منصوبہ شروع کریں گے جس سے لوگوں کو روزگار بھی ملے گا،علاقے میں ڈیم اور بائی پاس کے منصوبے شروع کریں گے، ان منصوبوں کا اعلان کررہا ہوں جن کو پایہ تکمیل تک پہنچائیں گے، اگلے دس سال تک قبائلی علاقوں کی ترقی پر سالانہ 100ارب روپے خرچ کریں گے، پورا یقین ہے کہ قبائلی علاقوں کے نوجوانوں کا مستقبل روشن ہے، پاکستان معاشی طور پر مشکل حالات سے گزررہا ہے، 2008میں پاکستان کا قرضہ 6ہزار ارب روپے تھا جس کو (ن)لیگ نے 30ہزار ارب روپے کر دیا،5سال بعد ہماری حکومت کا موازنہ سابق حکومتوں سے کیا جائے، علاقے میں 12ڈیم بنائیں گے جس سے کاشتکاری میں اضافہ ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ کبھی بھی ملک کے اتنے مشکل معاشی حالات نہیں تھے، ہم سمجھتے تھے کہ (ن)لیگ کا معاشی تجربہ اچھا ہے لیکن ان کا اصل تجربہ چوری ہے، بلاول بھٹو کو اسلام آباد دعوت دیتا ہوں میں ان کو کنٹینر دوں گا، میں چیلنج کرتا ہوں یہ لوگ ایک ہفتہ دھرنانہیں دے سکتے، آصف زرداری جلد جیل میں جانے والے ہیں،حکومت کہیں نہیں جا رہی، آمدنی بڑھانے کےلئے قرضہ لے کر وسائل بنانے پڑتے ہیں، جعلی اکاﺅنٹس میں 100ارب سے زائد پیسہ پڑا ہے جبکہ شریف خاندان کا 100ارب سے زائد بیرون ملک میں ہے، یہ چاہتے ہیں کہ ان کو این آر او دے دیں، اس کےلئے اپوزیشن حکومت پر دباﺅ ڈال رہی ہے، ان کو ملک کو جواب دینا پڑے گا جو انہوں نے ملک کا پیسہ چوری کیا ،جیلوں سے بچنا ہے تو ایک طریقہ ہے ملک کا پیسہ واپس کر دیں جو ہم قوم کی ترقی پر لگاسکیں، ہم خیبر اور افغانستان کے درمیان اکنامک کا ریڈور بنائیں گے تا کہ روزگار کے مواقع ملیں، خیبرپختونخوا کا انضمام مشکل کام ہے اور انتشار ڈالنے کی کوشش کی جائے گی، ہم اگلے دس سال میں قبائلی علاقوں کو ترقی یافتہ بنائیں گے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*