کوئٹہ میں پارکوں کا فقدان

صوبائی دارالحکومت کوئٹہ جس کی آبادی لاکھوں نفوس پر مشتمل ہے لیکن یہاں عوام کی سیروتفریح کےلئے کوئی خاص پارک نہیں ہے اس وقت کوئٹہ شہر میں لیاقت پارک ،عسکری پارک ،بے نظیر پارک اور سٹیلائٹ ٹاﺅن میں ایک پارک موجود ہے لیکن ان سے اکثر سہولتوں سے محروم ہیں شہر کے وسط میں قائم لیاقت پارک بھی پچھلے سال کچھ عرصے کے لئے بند رہا اس کے علاوہ سب سے بڑے پارک عسکری پارک میں بھی سہولتوں کا فقدان ہے اس پارک کا رقبہ بہت بڑا ہے لیکن اب یہ سمٹ گیا ہے کیونکہ خاص حصے میں جھولے وغیرہ لگے ہوئے ہیں ایک حصہ روڈ کا حصہ بن گیا پارک میں لگے لاتعداد درخت مناسب دیکھ بھال نہ ہونے کے باعث سوکھ رہے ہیں اس کے ساتھ ساتھ سبزہ نام کی کوئی چیز منظر نہیں آرہی اسی طرح دیگر سہولتوں کا بھی فقدان ہے جس کی وجہ سے یہ اہم پارک اپنی افادیت کھو رہا ہے جب یہ پارک نیا تعمیر ہوا تھا تو اس میں اس وقت کافی سہولتیں تھیں اور عوام کی بڑی تعداد کا رخ اس کی جانب ہوتاتھا خصوصاً فیملی ڈیمز کے موقع پر کافی رش ہوتا تھا مگر اب آہستہ آہستہ رش کم ہورہا ہے جس کی وجہ سہولتوں کا نہ ہونا ہے ایک اور اہم بات جس کا ذکر کرنا ضروری ہے وہ یہ ہے کہ یہ پارک پہلے پاک آرمی کے تحت تھا لیکن جب سے اس کو ٹھیکیدار کے حوالے کیا گیاہے اس کی افادیت کم ہو کر رہ گئی ہے ۔
سیٹلائٹ ٹاﺅن کے پارک کی حالت بھی ٹھیک نہیں ہے اس کی بھی صحیح طریقے سے دیکھ بھال نہیں ہو رہی ہے ان کے مقابلے میں لیاقت پارک اور بے نظیر پارک میں کچھ سہولتیں میسر ہیں جس کی وجہ سے یہاں اکثر رش زیادہ ہوتا ہے ۔
یہاں پر ایک اور پارک کا ذکر کرنا بھی ضروری ہے وہ شہر کے وسط میں قائم صادق شہید پارک ہے یہ پارک کوئٹہ کا سب سے پرانا پارک ہے لیکن بدقسمتی سے یہ پارک سکڑتے سکڑتے اب نہ ہونے کے برابر رہ گیا ہے اس میں سیاسی مداخلت کی گئی اور یہ الاٹ کیا جانے لگا ،پچھلے سال اس کے بچے کھچے حصے کی تزئین و تدوین کی گئی مگر اس کے باوجود عوام کےلئے نہ کھولا گیا جو کہ عوام کے ساتھ ایک بڑی زیادتی کے مترادف اقدام ہے ۔
صوبائی دارالحکومت کوئٹہ میں تفریحی مقامات بھی نہ ہونے کے برابر ہیں صرف ایک ہنہ اوڑک کا مقام ہے جہاں لوگ تفریح کےلئے جاتے ہیں اور شہر میں قائم پارکوں کی حالت کا مندرجہ بالا سطور ذکر کیا جاچکا ہے ۔
اس لئے یہاں ضرورت اس امر کی ہے کہ صوبائی دارالحکومت کو عوام کےلئے تفریحی کرنے کے مواقع پہنچانے چاہئیں جوکہ اس کے فرائض میں شامل ہے وہ جہاں دیگر مدات میں بجٹ مختص کرتے ہےں وہاں اور اس کو تفریحی مقامات اور پارکوں کےلئے اقدامات کرنے چاہئیں جوکہ انتہائی ناگزیر ہیں ۔
امید ہے کہ موجودہ حکومت اور انتظامیہ عوام کے اس اہم مسئلے کو حل کرنے کےلئے خاطر خواہ اقدامات کرے گی جوکہ ضروری ہیں کیونکہ یہ عوام کا حق ہے اور صوبائی حکومت کو عوام کے حقوق کا خاص خیال رکھنا چاہےے اور ان کو یہ حقوق بلاتفریق دینے چاہئیں ۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*