مسئلہ کشمیر زندہ حقیقت ،اسے دنیا کی کوئی طاقت جھٹلا نہیں سکتی ،سردار مسعود

Sardar Masood Khan

ڈلاس(م ڈ )صدر آزاد جموں و کشمیر سردار مسعود خان نے کہا ہے کہ مسئلہ کشمیر ایک ایسی زندہ حقیقت ہے جسے دنیا کی کوئی طاقت جھٹلا نہیں سکتی ہے ۔ عالمی برادری بالخصوس امریکہ کی ذمہ داری ہے کہ وہ مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قرار دادوں اور کشمیری عوام کی اُمنگوں کے مطابق حل کرنے کے لیے اپنا کردار ادا کرے ۔ مقبوضہ جموں و کشمیر کے عوام گزشتہ ستر سال سے حق خود ارادیت کے حصول کے لیے بے مثال قربانیاں دے کر اس مسئلہ کو زندہ رکھے ہوئے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے امر یکہ کے شہر ڈلاس میں ورلڈ افیئرز کونسل کے زیر اہتمام ایک تقریب سے خطاب اور ڈلاس امریکی کانگرس کے رکن پٹ سیشن سے ملاقات کے دوران کیا ۔ صدر آزاد کشمیر نے کہا کہ امریکہ کی سول سوسائٹی مقبوضہ جموں و کشمیر میں انسانی حقوق کی بد ترین پامالیوں کے خلاف عالمی رائے عامہ ہموار کرنے میں اہم کردار ادا کر سکتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مقبوضہ وادی میں بھارت کی سات لاکھ سے زیادہ فوج نہتے اور بے گناہ عوام کو اپنا حق خود ارادیت مانگنے کی پاداش میں شدید مظالم کا نشانہ بنا رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مقبوضہ جموں و کشمیر میں انسانی قتل عام پر عالمی برادری خاموش تماشائی کا کردارا ادا نہیں کر سکتی ۔ اس لیے اب وقت آ گیا ہے کہ عالمی برادی آگے بڑھ کر بھارت کو انسانیت کے خلاف جرائم سے روکے اور مسئلہ کشمیر کے پر امن تصفیہ کے لیے اپنی ذمہ داریوں کو پورا کرے ۔ انہوں نے کہا کہ بھارت مقبوضہ وادی میں جاری ریاستی دہشت گردی سے روکنا اور خطے میں بد امنی کا سبب بننے والے مسئلہ کشمیر کو عدل و انصاف کی بنیاد پر حل کرنا بین الاقوامی برادری کی اخلاقی اور قانونی ذمہ داری ہے ۔ صدر سردار مسعو د خان نے کہا کہ کشمیریوں کی پر ُامن اور انصاف پر مبنی حق خود ارادیت کی تحریک کو بھارت مذموم مقاصد کے لیے دہشت گردی اور عسکریت کا رنگ دے کر عالمی رائے عامہ کو گمراہ کرنے کی کوشش کر رہا ہے جو جھوٹ اور فریب کے سوا کچھ نہیں ہے ۔ اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے سالانہ اجلاس کے موقع پر بھارت اور پاکستان کے وزرائے خارجہ کی طے شدہ ملاقات کو بھارتی حکومت کی طرف سے منسوخ کرنے پر تبصرہ کرتے ہوئے صدر سردار مسعود خان نے کہا کہ مسائل کو گفت و شنید اور سفارتی انداز میں طے کرنے کا یہ نادر موقع بھارت کی ہٹ دھرمی ی وجہ سے ضائع ہو گیا جس کی وجہ سے کشمیر میں جبر و تشدد کی ایک نئی لہر شروع ہونے کا اندیشہ پیدا ہو گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کمیشن کی رپورٹ میں مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی بد ترین پامالیوں کی تحقیقات کے لیے ایک انکوائری کمیشن کے قیام کے راستے میں رکاوٹیں کھڑی کرنے کی کوشش کر رہا ہے جس کی اسے ہر گز اجازت نہیں دی جانی چاہیے ۔سردار مسعود خان نے امریکہ اور دیگر ممالک میں مقیم کشمیریوں پر زور دیا کہ وہ امریکی ایوان ، نمائندگان اور امریکی سینٹ کے ارکان سے ملاقاتیں کر کے مسئلہ کشمیر کو اس کے صحیح تناظر میں اُجاگر کریں اور بھارتی فوج کے مظالم اور انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے بے نقاب کریں ۔ اس موقع پر صدر سردار مسعود خان نے ورلڈ افیئرز کونسل کے ارکان کو آزاد کشمیر کے دورے کی دعوت دی جبکہ مقامی کاروباری شخصیات اور تاجروں نے آزاد کشمیر میں سرمایہ کاری کرنے کے لیے دلچسپی کا اظہار کیا ۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*