پاکستان اور چین دونوں خطے کی معاشی ترقی کے خواہاں ہیں ،چیئرمین سینیٹ

اسلام آباد (بیورورپورٹ)چیئرمین سینیٹ محمد صادق سنجرانی نے چین کے 69 ویںقومی دن کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان اور چین خطے میں ترقی و خوشحالی کےلئے ایک جیسا نقطہ نظر اس بات کی دلیل ہے کہ دونوں ملک خطے کی معاشی ترقی کے خواہاں ہیں ۔ انہوں نے شرکا ءسے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان چین کے ساتھ اپنے دوطرفہ تعاون کو قدر کی نگاہ سے دیکھتا ہے اور چین کے ساتھ تعلقات ہماری خارجہ پالیسی میں انتہائی اہم مقام رکھتے ہیں ۔ا نہوں نے کہا کہ نئی منتخب حکومت دوطرفہ تعلقات کو نئی بلندیوں پر لے جانے اور مشترکہ مقاصد کے حصول کےلئے چین کے ساتھ مل کر کام کرے گی ۔ انہوں نے اس موقع پر پاکستان کی پارلیمنٹ ، حکومت اور عوام کی جانب سے نیک خواہشات اور تمناﺅں کا پیغام بھی دیا ۔ چیئرمین سینیٹ نے کہا کہ ایشیائی پارلیمانی اسمبلی کے نائب صدر کی حیثیت سے میرا یہ یقین ہے کہ تعاون کے ذریعے ایشیاءکی تقدیر کو ہم مشترکہ طور پر بدل سکتے ہیں اور یہی ہمارا لائحہ عمل ہونا چاہیے تاکہ ایشیاءکے عوام کو ایک خوشحال مستقبل کی نوید دی جا سکے ۔ انہوں نے کہا کہ سینیٹ اگلے مہینے ایشیائی پارلیمانی اسمبلی کی سیاسی امور کی کمیٹی کا اجلاس گوادر میں کروانے کے انتظامات میںمصروف ہے اور گوادر کو اس وجہ سے منتخب کیا گیا کہ یہ شہر پاکستان اور چین کی ترقی کےلئے مرکزی حیثیت رکھتا ہے ۔ اور سی پیک کی کامیابی کا مظہر بھی ہے ۔ صادق سنجرانی نے کہاکہ چین ابھرتے ہوئے عالمی اقتصادی لیڈر کی حیثیت سے ایشیائی پارلیمانی اسمبلی کے فورم پر موثر کردار ادا کر سکتا ہے ۔ انہوں نے چین کی ترقی کو ایشیاء، افریقہ اور جنوبی امریکہ کےلئے ایک مثال قرار دیا اور کہا کہ آج مغرب مشرق کی طرف دیکھ رہا ہے ۔اور مشرق کے ممالک چین کی طرف دیکھ رہے ہیں اور اسی سے ایشیائی صدی کو تقویت ملتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اور چین ترقی کے مشترکہ ویژن میں شراکت دار ہیں اور ترقیاتی تعاون اور رابطہ کاری کے ذریعے ان مقاصد کے حصول کےلئے کوشاں ہیں جو ایشیا کو پر امن اورخوشحال بنائیں گے ۔ انہوں نے چین پر زور دیا کہ وہ ایشیائی پارلیمانی اسمبلی کی سیاسی امور کمیٹی کے اجلاس میں اپنی شرکت کو یقینی بنائیں تاکہ سماجی و اقتصادی ترقی اور خطے میں رابطہ کاری کے لئے تبادلہ خیال کرنے کا مزید موقع ملے ۔ انہوں نے یہ بات واضح کی کہ پاکستان سی پیک کے منصوبوں کی تکمیل کےلئے پر عز م ہے اور سی پیک کے خصوصی اقتصادی زونز میں شرکت کو خوش آمدید کہتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اور چین کے تعلقات ایک نئے دور میں داخل ہو گئے ہیں ۔انہوں نے صوبوں اور شہروں کے مابین تعاون کو فروغ دینے کی بھی تجویز دی اپنے حالیہ دورہ چین کا ذکر کرتے ہوئے صادق سنجرانی نے کہا کہ چین کی قیادت کے ساتھ ہونے والے تبادلہ خیال اور مختلف وفود کے ساتھ ملاقاتوں میں دوطرفہ تعاون کو آگے بڑھانے پر تفصیلی تبادلہ خیال ہوا ۔ انہوں اس بات کو دہرایا کہ گوادر اور چین کے شہر ڈالیان کو جڑواں شہر قرار دیا جائے کیونکہ دونوں میں کافی مماثلت ہے اور دونوں ایسے شہر ہیں جہاں جہاز رانی کی سہولت موجود ہے ۔ انہوں نے اس اُمید کا اظہا رکیا کہ پاکستان اور چین کے دوطرفہ تعلقات وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ مزید مستحکم ہونگے اور تعاون کےلئے نئی راہیں ہموار ہونگی ۔ چیئرمین سینیٹ نے اس موقع پر چین کے سفیر یاﺅ جنگ کا بھی خصوصی شکریہ ادا کیا اور دونوں ممالک کے درمیان تعاون کو مزید وسعت دینے کے حوالے سے ان کی کاوشوں کو سراہا۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*