سیاحت کے فروغ کیلئے وزیر اعظم کا ٹاسک فورس کی تشکیل کا حکم

Prime Minister Imran Khan

اسلام آباد(نیوز ایجنسیاں)وزیراعظم عمران خان نے سیاحت کے فروغ کے لیے ٹاسک فورس قائم کرنے کا حکم دیتے ہوئے تمام صوبوں سے ایک ہفتے میں سیاحت کے فروغ سے متعلق تجاویزمانگ لیں اور ٹاسک فورس کے ٹی او آر ز کو مدنظر رکھتے ہوئے جامع پلان اور مقرر کردہ اہداف کےلئے ٹائم فریم مرتب کرنے کی ہدایت بھی کی، وزیراعظم نے کہاکہ صوبائی سطح پر سیاحت کے فروغ میں حائل تمام رکاوٹوں کی نشاندہی کی جائے تاکہ وفاق کی جانب سے ان رکاوٹوں کا قابل عمل حل تلاش کرنے میں معاونت فراہم کی جا سکے،سیاحت کا فروغ صوبائی ذمہ داری ہے تاہم وفاقی حکومت سیاحت کے فروغ میں حائل رکاوٹوں کو دور کرنے اور صوبوں کی استعداد بڑھانے میں ہر ممکنہ مدد فراہم کرے گی ، ٹورازم، مذہبی سیاحت اور ایڈونچر سیاحت کے فروغ کے ساتھ ساتھ ٹورارسٹ ریزارٹ کے قیام پر خصوصی توجہ دینے کی ضرورت ہے، سیاحت کے فروغ کے لئے ایک مفصل اور جامع پالیسی تشکیل دی جائے گی۔ہفتہ کو وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت ٹورازم ٹاسک فورس کا اجلاس ہوا۔ اجلاس میں متعلقہ صوبائی وزرا یاسر ہمایوں، محمد عاطف، عبدالخالق ہزارہ، مشتاق منہاس وزیر برائے سیاحت آزاد جموں و کشمیر،وفاقی و صوبائی سیکریٹریز، علی توقیر شاہ، وقار ذکریا، سراج الملک، ذوالفقار علی خان ودیگر نے شرکت کی۔وزیر اعظم عمران خان نے ٹاسک فورس میں شامل تمام صوبائی نمائندگان کو اپنے اپنے صوبوں اور علاقوں میں نئے سیاحتی مراکز کے قیام کی غرض سے ممکنہ مقامات کی ایک ہفتے میں نشاندہی کرنے اور آئندہ ایک ہفتے میں تمام صوبائی حکومتیں اور متعلقہ محکمے بشمول آزاد جموں کشمیراور گلگت بلتستان ٹاسک فورس کے ٹی او آر ز کو مدنظر رکھتے ہوئے جامع پلان اور مقرر کردہ اہداف کےلئے ٹائم فریم مرتب کرنے کی ہدایت کی۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ صوبائی سطح پر سیاحت کے فروغ میں حائل تمام رکاوٹوں کی نشاندہی کی جائے تاکہ وفاق کی جانب سے ان رکاوٹوں کا قابل عمل حل تلاش کرنے میں معاونت فراہم کی جا سکے،سیاحت کا فروغ صوبائی ذمہ داری ہے تاہم وفاقی حکومت سیاحت کے فروغ میں حائل رکاوٹوں کو دور کرنے اور صوبوں کی استعداد بڑھانے میں ہر ممکنہ مدد فراہم کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ ایکو ٹورازم، مذہبی سیاحت اور ایڈونچر سیاحت کے فروغ کے ساتھ ساتھ ٹورارسٹ ریزارٹ کے قیام پر خصوصی توجہ دینے کی ضرورت ہے، سیاحت کے فروغ کے لئے ایک مفصل اور جامع پالیسی تشکیل دی جائے گی تاکہ سیاحت سے منسلک تمام شعبے اس پالیسی سے استفادہ حاصل کریں اوراس شعبے کو مزید مستحکم بنایا جاسکے اور ملک میں موجود سرکاری ریسٹ ہاسزکا انتظام ایک شفاف طریقے اور پہلے سے طے شدہ طریقہ کارکے تحت نجی شعبے کے حوالے کرنے سے جہاں سیاحت کو فروغ ملے گا وہاں ان اثاثوں کا صحیح استعمال بھی یقینی بنایا جاسکے گا۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ ملک کے طول و ارض میں پھیلے سینکڑوں سیاحتی مقامات خصوصا شمالی علاقہ جات، ساحلی علاقوں، مذہبی مقامات، موہنجو داڑو جیسے تاریخی مقامات پر توجہ سے ملک کے لاکھوں نوجوانوں کو روزگار میسر آئے گا،جدید ٹیکنالوجی اور خصوصا سوشل میڈیا کو بروئے کار لا کر ملک کے سیاحتی پوٹینشل کو باآسانی ملک بھر اور عالمی سطح پر اجاگر کیا جا سکتا ہے۔اس موقع پر وزیر اعظم کوصوبائی وزرا اور صوبائی حکومتوں کی جانب سے سیاحت کےلئے کئے جانے والے اقدامات پر بریفنگ بھی دی گئی۔اس موقع پر وزیراعظم نے کہا کہ اپنے صوبوں میں سیاحتی مقامات کی نشان دہی کریں، پاکستان سیاحتی مقامات سے مالا مال ملک ہے۔وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ سیاحت کے فروغ سے مقامی افراد کو بھی فائدہ ہوگا، بیش تر ممالک سیاحت سے ریوینیو حاصل کرتے ہیں۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*