دوستی کی سرحد نہیں , پاک ہند کرکٹ مداحوں نے ثابت کردیا

شکاگو(سپورٹس نیوز)پاکستان اور بھارت کے دو کرکٹ مداحوں کی دوستی نے یہ ثابت کردیا کہ کرکٹ اور محبت کی کوئی سرحد نہیں ہے۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق شکاگو میں مقیم پاکستانی محمد بشیر کرکٹ کے بڑے مداح ہیں اور وہ قومی ٹیم کو سپورٹ کرنے کےلئے ہر ٹورنامنٹ میں ضرور شرکت کرتے ہیں ¾یہی وجہ ہے کہ لوگ انہیں بشیر چاچا کہہ کر پکارتے ہیں۔اسی طرح سدھیر کمار نامی ایک بھارتی شہری بھی کرکٹ کے بڑے مداح ہیں اور اپنی کرکٹ ٹیم کو سپورٹ کرنے کےلئے ہر میچ میں شرکت کرتے ہیں جنہیں اسپانسر سابق بھارتی بلے باز سچن ٹنڈولکر کرتے ہیں۔بشیر چاچا اور سدھیر کمار کی دوستی 2011 کے کرکٹ ورلڈ کپ کے دوران ہوئی تھی جس کے بعد یہ دونوں اپنی اپنی ٹیموں کو سپورٹ کرتے ہوئے اچھے دوست بن گئے۔رواں ماہ ہونے والے ایشیا کپ کے دوران بشیر چاچا نے دبئی پہنچنے سے پہلے سدھیر کمار کو فون کیا جنہوں نے بوجھل دل سے بتایا کہ اس بار وہ ایشیا کپ میں شرکت نہیں کرسکیں گے کیونکہ سچن ٹنڈولکر لندن نہیں پہنچ سکے ہیں ¾ایسے میں بشیر چاچا نے بڑا پن دکھاتے ہوئے انہیں دبئی آنے کی پیشکش کردی اور ان کے اخراجات اٹھانے کے حوالے سے بھی بے فکر کردیا ¾اب دونوں ایشیا کپ ٹورنامنٹ کے دوران دبئی کے ا±سی ہوٹل میں مقیم ہیں جہاں بھارتی کرکٹ ٹیم بھی موجود ہے اور ایک ہی کمرے کو شیئر کر رہے ہیں۔بشیر چاچا کے مطابق میں نے سدھیر کو بلاتے ہوئے کہا کہ پیسہ آتا جاتا رہے گا، یہ سچی محبت ہے، تم صرف آجاو¿ باقی سب ہوجائےگا۔بشیر چاچا کے مطابق میں بہت امیر نہیں ہوں لیکن میرا دل سمندر جیسا ہے ¾اگر میں مدد کرتا ہوں تو اللہ میری مدد کرے گا۔دوسری جانب سدھیر کمار کا کہنا ہے کہ میں اور بشیر ہمیشہ میچ کے دوران ایک دوسرے کی ٹانگ کھینچتے ہیں لیکن آخر میں کرکٹ دو قوموں کو آپس میں جوڑ دیتی ہے، مجھے دبئی بلا کر بشیر نے ثابت کردیا کہ دوستی کی کوئی سرحد نہیں ہوتی۔بشیر چاچا اب بھی دبئی میں موجود ہیں۔ انہوں نے ہوٹل میں بھارتی کرکٹ کپتان روہت شرما اور بھارتی کیپر ایم ایس دھونی کے ساتھ بھی تصاویر بنوائیں جس پر بھارتی کرکٹرز نے انہیں قابل ستائش قرار دیا۔ بشیر چاچا کو پاکستان کے فائنل میں نہ پہنچنے کا دکھ تو ہے تاہم وہ پر امید ہیں کہ اگلی دفعہ پاکستان ضرور اچھا پرفارم کرے گا۔
٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*