دہشتگردوں کو کسی صورت معا ف نہیں کیاجائیگا،وزیراعلیٰ بلوچستان

Mir Jam Kamal Khan

تربت(خ ن) وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے گذشتہ روز مستونگ میں دہشت گردوں کے خلاف سیکیورٹی فورسز کی کامیاب کارروائی پر اطمینان کا اظہار کیا ہے جبکہ انہوں نے دہشت گردوں سے مقابلے میں دو سیکیورٹی اہلکاروں کی شہادت پر دکھ اور افسوس کا اظہار اور شہداءکے خاندانوں سے تعزیت اور ہمدردی کا اظہار بھی کیا ہے، وزیراعلیٰ نے دہشت گردی کے مکمل خاتمے کے عزم کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہماری بہادر سیکیورٹی فورسز نے مقابلے میں دہشت گردوں کو کیفرکرا تک پہنچاکر ثابت کیا ہے کہ دہشت گردوں کو کسی صورت معاف نہیں کیا جائے گا۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ بلوچستان کو پرامن بنانے کے لئے دہشت گردوں کے خلاف کاروائی جاری رکھی جائے گی اور کسی کو بدامنی پیدا کرنے اور صوبے اور عوام کی ترقی میں رکاوٹ ڈالنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ وزیراعلیٰ نے شہداءکے درجات کی بلندی اور زخمی اہلکاروں کی جلد صحت یابی کی دعا کی ہے دریں اثناء وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے کہا ہے کہ جو قومیں اپنی نوجوان نسل کو تعلیم یافتہ بناتی ہیں ترقی ان قوموں کے قریب آجاتی ہے، بدقسمتی سے ہم تعلیمی شعبہ میں بہت پیچھے رہ گئے ہیں اور ترقی بھی ہم سے دور ہے، ہم سب محنت اور لگن کے ساتھ اس فرق کو ختم کرنا ہے جس میں اہم کردار طلباءکا ہوگا، اگر وہ شوق اور عزم کے ساتھ تعلیم حاصل کریں گے تو اس کا فائدہ ملک او رصوبے کو پہنچے گا، ان خیالات کا اظہار انہوں نے یونیورسٹی آف تربت میں طلباءوطالبات میں لیپ ٹاپ تقسیم کرنے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ وفاقی وزیر زبیدہ جلال، صوبائی وزراءسردار عبدالرحمن کھیتران، عبدالخالق ہزارہ، میر ظہور بلیدی نصیب اللہ مری، سردا ر نور محمد دمڑ، عبدالر¶ف رند، اراکین صوبائی اسمبلی سید احسان شان اور میر اکبر آسکانی بھی اس موقع پر موجود تھے۔ وزیراعلیٰ نے اپنے خطاب میں کہا کہ وہ طلباءکے ساتھ مسلسل رابطے میں رہتے ہوئے ان کی حوصلہ افزائی کرتے رہیں گے اور حکومت تعلیمی اداروں میں جدید سہولتوں کی فراہمی کے ذریعہ ان کی سرپرستی کرے گی، انہوں نے طلباءکو تلقین کی کہ وہ اپنے والدین کی امیدوں پر پورااترتے ہوئے اپنی یونیورسٹی کا معیار بھی بلند کریں اور خود کو ایک کامیاب انسان ثابت کریں، وزیراعلیٰ نے کہا کہ ہم تعلیم کے شعبہ میں جتنا بھی کام کریں وہ کم ہوگا کیونکہ دنیا آگے جاچکی ہے، وزیراعلیٰ نے کہا کہ ہمارے نوجوان باصلاحیت ہیں اور کا مستقبل روشن ہے، طلباءسیاست بھی کریں لیکن مثبت اور تعمیری سوچ اپنائیں، انہوں نے کہا کہ تربت جیسے دور دراز علاقے میں یونیورسٹی کا قیام ایک بڑی پیشرفت ہے اور انہیں طلباءکے روشن چہرے دیکھ کر خوشی اور اطمینان محسوس ہورہا ہے، قبل ازیں یونیورسٹی کے وائس چانسلر نے سپاسنامہ پیش کیا، بعد ازاں وزیراعلیٰ اور صوبائی وزراءنے طلباءمیں لیپ ٹاپ تقسیم کئے، وزیراعلیٰ نے یونیورسٹی میں پودا لگایا اور نئے فیکلٹی بلاک کا افتتاح کیا دریں اثناءوزیر اعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے کہا ہے کہ بلوچستان عوامی پارٹی کے قیام کا مقصد بلوچستان کے عوام کی خدمت کرنا ہے، یہ جماعت اللہ تعالیٰ کی مدد سے عوام کی توقعات پر پورا اترنے کی ہر ممکن کوشش کریگی، اللہ تعالیٰ نے ہمیں ایک اہم موقع دیا ہے اور ہم اس موقع سے بھرپور فائدہ اٹھائیں گے اور عوام کے مسائل کو حل کرنے کے لئے بلوچستان کے ہر کونے کا دورہ کرینگے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے بلوچستان عوامی پارٹی کے زیر اہتمام جمعرات کے روز یہاں شمولیتی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ہوئے کیا۔وزیر اعلیٰ نے کہا کہ عوامی فلاح و بہبودکو اپنا شعار بنا کر عوام کو بتانا چاہتے ہیں کہ بلوچستان عوامی پارٹی عوام کے مسائل کو حل کرنے کیلئے سنجیدہ ہے اور ان کے حل کے لئے عملی اور ترجیحی بنیادوں پر اقدامات اٹھائیگی، وزیر اعلیٰ نے کہا کہ ہم صرف زبانی جمع خرچ پر یقین نہیں رکھتے بلکہ عملی اقدامات کر کہ ثابت کرینگے کہ بلوچستان عوامی پارٹی حقیقت میں ایک عوامی جماعت ہے، وزیراعلیٰ نے کہا کہ اب کاغذی منصوبوں سے کام نہیں چلے گابلکہ عملی طور پر کام کر کے عوام کو دکھانا ہوگا ۔ اس موقع پر تربت کے معروف سماجی شخصیت ٹھیکیدار زیبر رند نے اپنے سینکڑوں ساتھیوں کے ہمراہ بلوچستان عوامی پارٹی میں شمولیت کا اعلان کیا۔ وزیر اعلیٰ بلوچستان کو تربت آمد پر خوش آمدید کرتے ہوئے انہوں نے توقع کا اظہار کیا کہ بلوچستان عوامی پارٹی ضلع کیچ کے مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر حل کریگی۔ انہوں نے کہا کہ بلوچستان عوامی پارٹی کو بلوچستان کے کونے کونے پر لے جائینگے اور وزیر اعلیٰ بلوچستان جام کمال خان کی قیادت میں نیشنل عوامی پارٹی صوبے میں عوام کی خدمت جاری رکھے گی۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*