تازہ ترین

فواد عالم کے 10 سال ضائع ہونےکی تحقیقات کروا معذرت کی جائے‘ خالد محمود

Former_PCB_Chairman_Khalid_Mehmood

لاہور(سپورٹس ڈیسک) پی سی بی کے سابق سربراہ خالد محمود مڈل آرڈر بلے باز فواد عالم کی حمایت میں سامنے آگئے۔ لاہور میں او ٹی چیلنج کپ ٹورنامنٹ کے فائنل کے موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے خالد محمود نے اوپنر شرجیل خان کی ٹیم میں واپسی کی مخالفت بھی کی ، ان کا کہنا تھا کہ جسٹس ریٹائرڈ ملک قیوم کی انکوائری رپورٹ کے تحت جس نے بھی کرپشن کی اسے کرکٹ بورڈ میں کوئی عہدہ نہیں ملنا چاہیے، افسوس ہے کہ ہم نے قیوم رپورٹ پر مکمل طور پر عمل نہیں کیا ،اب شرجیل خان کو قومی ٹیم میں واپس لانے کی باتیں ہورہی ہیں، میں ایسی سوچ کے خلاف ہوں۔خالد محمود کا کہنا تھا کہ بھارت میں رواں سال شیڈول ٹی ٹونٹی ورلڈ کپ کے لیے پی سی بی کو ابھی سے ہر فورم پر آواز اٹھانی چاہیے، بہتر تویہ ہوگا کہ ٹی ٹونٹی ورلڈ کپ بھارت سے کہیں اور منتقل کردیا جائے، اگر پاکستانی ٹیم کو بھارت بھیجنا پی سی بی کی مجبوری ہے تو آئی سی سی سے کھلاڑیوں کی حفاظت یقینی بنانے کی گارنٹی لینی چاہیئے، حکومت اور کرکٹ بورڈ کی ذمہ داری ہے کہ وہ کھلاڑیوں کیلئے بروقت سکیورٹی انتظامات کرے۔پی سی بی کے سابق سربراہ نے انکشاف کیا کہ ان کے مستعفی ہونے کی وجہ یہ تھی کہ ان پر سیاسی دباو¿ ڈالا گیا ، ہر چیئرمین پر سیاسی دباو¿ ہوتا ،جو مان جائے اس کی مدت ملازمت بڑھا دی جاتی ہے۔ خالد محمود کے مطابق وقار یونس اتنی مرتبہ کوچ بن کر بھی کچھ نہیں کرپائے ہیں۔ خالد محمود کا کہنا تھا کہ فواد عالم کے کیریئر کے 10 سال ضائع ہونے کی تحقیقات کروا کر پی سی بی کو مڈل آرڈر بلے باز سے معذرت کرنی چاہیئے، سلیکٹرز کرکٹ بورڈ کے نمائندے ہوتے ہیں، فواد عالم کو 10 سال کھیلنے کا موقع نہ دینا انہی نمائندوں کی کوتاہی ہے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*