تازہ ترین

فلسطینی علاقوں میں اسرائیلی جنگی جرائم‘ عالمی عدالت میں تحقیقات کی راہ ہموار

ہیگ (م ڈ)ہیگ میں بین الاقوامی فوجداری عدالت کے ججز نے کہا ہے کہ غزہ، غرب اردن اور یروشلم جیسے علاقوں سے متعلق انہیں تحقیقات کا اختیار ہے۔ فلسطینیوں نے اس فیصلے کا خیر مقدم کیا ہے جبکہ اسرائیل نے اسے ’سیاسی‘ فیصلہ قرار دیا۔ ہیگ میں واقع بین الاقوامی فوجداری عدالت (آئی سی سی) نے اپنے ایک اہم فیصلے میں کہا کہ سن 1967 کی جنگ کے بعد جن فلسطینی علاقوں پر اسرائیل کا قبضہ ہے، وہ علاقے اس کے دائرہ اختیار میں آتے ہیں اور ایسے علاقوں سے متعلق بین الاقوامی فوجداری عدالت تحقیقات کر سکتی ہے۔تین رکنی بینچ کے دو ججوں کی اکثریت نے یہ فیصلہ کیا جبکہ ایک جج نے اس کی مخالفت کی۔ اس فیصلے میں کہا گیا ہے، ”یروشلم سمیت غزہ اور غرب اردن“ جیسے مقبوضہ فلسطینی علاقوں پر اسے فیصلہ کر نے کا اختیار حاصل ہے۔اس فیصلے کی روشنی میں اب ہیگ میں واقع ٹرایبیونل کی چیف پراسیکیوٹر کے لیے اسرائیلی فوج کی کارروائیوں سے متعلق جنگی جرائم کی تحقیقات کر نے کا راستہ ہموار ہو گیا ہے۔ بین الاقوامی فوجداری عدالت کی پراسیکیوٹر فاتو بن سوڈا نے سن 2019 میں کہا تھا کہ سن 2014 کے دوران غزہ کی پٹی میں اسرائیلی فوج نے جو کارروائیاں کی تھیں، اس سے متعلق جنگی جرائم کی تحقیقات کی ’معقول بنیاد‘ موجود ہے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*