تازہ ترین

ریفل پرائز میں شراب کے بدلے چاکلیٹ، مسلم ورکر کے حق میں فیصلہ

لندن (م ڈ)برطانیہ میں ایک شخص نے اپنے آجر پر کامیابی سے مقدمہ دائر کیا ہے جس میں اس نے الزام عائد کیا ہے کہ اس کے آجر نے اسے ریفل پرائز کے طور پر شراب کی مہنگی بوتل دینے کی بجائے چاکلیٹ کا ڈبہ دے کر کر اسے مذہبی طور پر ہراساں کیا ہے۔ زکریا کیووا نامی شخص جو مسلمان ہونے کی حیثیت سے شراب نہیں پیتے کو انگلینڈ کے جنوب میں واقع فائیو سٹار لینسٹن ہوٹل کے مینجروں نے بتایا کہ وہ شراب کی بوتل دے کر انہیں ٹھیس نہیں پہنچانا چاہتے ہیں۔ یہ ایسا ہی ہوتا جیسے نٹ الرجی والے شخص کو نٹ کی پیش کش کی جائے۔ لیکن 37 سالہ کیوآ نے کہا کہ ان کا عقیدہ ’بیماری نہیں۔ اس طرزِ عمل پر شرمندگی محسوس ہوئی۔ انہیں ’اپنے مذہبی عقائد کی وجہ سے‘ نشانہ بنایا گیا ہے۔ برطانوی میڈیا کے مطابق جنوری 2017 میں منعقد کی جانے والی سٹاف پارٹی میں شراب کی بوتل ایک ریفل پرائز تھا۔ کیووا نے برطانیہ منتقل ہونے سے قبل الجیریا میں ایک ڈاکٹر کی حیثیت سے تربیت حاصل کی تھی

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*