تازہ ترین

بلوچستان سے این ایف سی کے غیر سرکاری رکن جاوید جبار رضا کارانہ طور پر مستعفی

کوئٹہ( این این آئی)بلوچستان سے این ایف سی ایوارڈ کے غیر سرکاری رکن جاوید جبار رضاکارانہ طور پر مستعفی ہوگئے تفصیلات کے مطابق بلوچستان سے 10 ویں این ایف سی ایوارڈ کے غیر سرکاری رکن نے اپنے عہدے سے استعفی دے دیا ہے جاوید جبار کی نامزدگی کو بلوچستان کے سیاسی حلقوں کی جانب سے شدید تنقید کانشانہ بنایا گیا تھا جبکہ انکی تقرری کے خلاف رکن قومی اسمبلی محمد اسلم بھوتانی اور بلوچستان کے وکلاءنماندوں کی جانب سے بلوچستان ہائی کورٹ میں الگ الگ آئینی درخواستیں دائر کی گئی تھیں در یں اثنا ءسابق سینیٹر جاوید جبار NFCسے بلوچستان کی نمائندگی سے مستعفی ہو گئے ایم این اے اسلم بھوتانی اور بلوچستان کی دیگر سیاسی قیادت کی فتح بتایا جاتا ہے کہ سابق سینیٹر جاوید جبار کو ملک کے 10ویں این ایف سی ایوارڈ کےلئے وزیر اعلیٰ بلوچستان نے صوبے کی نمائندگی کےلئے نامزد کیا تھا جس پر نہ صرف ایم این اے اسلم بھوتانی اور بلوچستان کی سیاسی قیادت نے اس نامزدگی پر اعتراض کیا تھا بلکہ ایم این اے اسلم بھوتانی نے پارلیمنٹ اور میڈیا میں اُنکی تقرری پر سخت موقف اپنایا اور امان اللہ کنرانی ایڈوکیٹ کی توسط سے عدالت میں پٹیشن بھی داخل کی عوامی دباﺅ کے نتیجے میں جاوید جبار نے رضاکارانہ طور پر این ایف سی سے بلوچستان کی نمائندگی سے دستبردار ہو کر ایک اچھا فیصلہ کیا تودوسری جانب یہ بھی ثابت کردیا کہ این ایف سی میں انکی نامزدگی کا فیصلہ غیر منصفانہ تھا اس حوالے سے لسبیلہ و گوادر سے منتخب آزاد رکن قومی اسمبلی محمد اسلم بھوتانی نے اپنے جاری بیان میں اُن تمام دوستوں میڈیا بار کونسلز اور سیاسی جماعتوں کا شکریہ ادا کیا ہے جنہوں نے اس احتجاج میں اُنکا ساتھ دیا واضح رہے کہ سابق سینیٹر جاوید جبار کی این ایف سی میں بلوچستان سے نمائندگی پر اعتراض میں وفاق میں PTIحکومت کے حمایتی MNAاسلم بھوتانی نے پہل کی اور عدالتی چارہ جوئی کا فیصلہ کر کے عدالت پہنچے بعدازاں بلوچستان کی اپوزیشن جماعتوں اور وکلاءو بار کونسل نے بھی اس متعلق احتجاج کیا اور عدالت سے رجوع کیا اسلم بھوتانی کا مزید کہنا ہے کہ اس حوالے سے اُنہیں اور بلوچستان کی دیگر سیاسی جماعتوں نے جو احتجاج کیا اس پر اُنہیں اللہ پاک نے سرخرو کیا انہوں نے مزید کہا کہ جاوید جبار نے یہ محسوس کیا کہ وہ این ایف سی میں جس صوبے کی نمائندگی کرنے جارہے ہیں اسکے عوام کی اکثریت انکی تقرری کے خلاف ہیں اور انہوں نے رضاکارانی طور پر اس سے علحیدگی کا فیصلہ کیا جس پروہ انکے اس فیصلے کو سرہاتے ہیں۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*