تازہ ترین

احساس پروگرام اسلامی فلاحی ریاست کی بنیاد ہے، عمران خان

Prime-Minister-Imran-Khan-PM

اسلام آباد (نیوز ایجنسیاں+م ڈ)وزیراعظم عمران خان نے پہلے ون ونڈو احساس مرکز کا افتتاح کر تے ہوئے کہاہے کہ احساس پروگرام اسلامی فلاحی ریاست کی بنیاد ہے، پروگرام کے ڈیٹا اکٹھا کر کے ایک نظام کے مستحقین تک پہنچا جائے اور ٹارگٹڈ سبسڈی کی طرف جائیں گے۔ بدھ کو وزیراعظم عمران خان نے اسلام آباد میں پہلے ون ونڈو احساس سینٹر کا افتتاح کیا۔ اس موقع پر چیئر پرسن احساس پروگرام ثانیہ نشتر نے وزیراعظم کو احساس ون ونڈو سینٹر کے حوالے سے مختلف امور پر بریفنگ دی۔ وزیراعظم نے اس موقع پر منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ احساس پروگرام اسلامی فلاحی ریاست کی بنیاد ہے اور اس سے غریب اور مستحق افراد بہتر طریقے سے مستفید ہوں گے۔ انہوں نے معاون خصوصی ثانیہ نشتر کو ہدایت کی کہ طلباءکے سکالر شپس پروگرامز کو یکجا کیا جائے کیونکہ صوبوں میں بھی سکالر شپس کا اپنا میکانیزم موجود ہے، تمام احساس پروگرام کا ڈیٹا ایک کیا جائے تا کہ ڈبلیکیشن نہ ہو اور سسٹم کو ایسا ہونا چاہیے کہ سب معلوم ہو کہ زکوٰة کون لے رہا ہے اور دیگر پروگرامز میں کون ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جب حکومت کے پاس لوگوں کا ڈیٹا آ جائے گا تو ہم ٹارگٹ سبسڈی کی طرف جاسکیں گے،جو ہماری کوشش ہے۔ وزیراعظم عمران خان کو اس موقع پر معاون خصوصی ثانیہ نشتر نے بریفنگ دی کہ احساس مرکز میں ایک ہی احساس کی تمام سہولیات رسائی ممکن ہو گی، احساس ون ونڈو کے 6 جزو ہیں، احساس ون ونڈو سینٹر کے افتتاح کے وقع پر وزیراعظم عمران خان نے پودا بھی لگایا اور احساس مرکز کے مختلف حصوں کا دورہ کیا۔دریں اثناءوزیرِ اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ پاکستان میں پہلی دفعہ معاشی طور پر کمزور طبقے کو غربت سے نکالنے کیلئے جامع حکمت عملی مرتب کی گئی ہے،ہمسایہ ملک چین اور بھارت کی مثال سامنے ہے، چین نے پچھلے تیس سال میں لاکھوں لوگوں کو ایسے اقدامات کے تحت غربت سے نکالا جبکہ بھارت اس میں ناکام رہا،حکومت کی اولین ترجیح نچلے طبقے کے لوگوں کی مالی مدد کے ساتھ ساتھ ایسے اقدامات سے انہیں روزگار میں خود کفیل بنانا ہے۔ بدھ کووزیرِ اعظم عمران خان کی زیرِ صدارت کامیاب پاکستان پروگرام کا اعلیٰ سطح کا اجلاس ہواجس میں وزیرِ خزانہ شوکت فیاض ترین، معاونینِ خصوصی وقار مسعود، عثمان ڈار، چیئرمین نیا پاکستان ہاﺅسنگ اتھارٹی لیفٹیننٹ جنرل (ر) انور علی حیدر، چیئرمین حبیب بنک سلطان علی الانہ، ظفر مسعود پریزیڈنٹ پنجاب بنک، متعلقہ اعلیٰ حکام اور سٹیک ہولڈرز نے شرکت کی ۔اجلاس کو کامیاب جوان پروگرام کے تحت کامیاب کاروبار، کامیاب کسان اور کامیاب ہنرمند پروگرام، کم لاگت رہائشی سکیموں اور کامیاب پاکستان ہاﺅسنگ کیلئے ہول سیل لینڈنگ کو ایک پروگرام، کامیاب پاکستان پروگرام میں شامل کرنے پر بریفنگ دی گئی ۔کامیاب پاکستان پروگرام ملک میں معاشی سرگرمیوں کو بڑھانے اور لوگوں کو روزگار کیلئے خود کفیل کرنے میں اہم کردار ادا کرے گا ۔پروگرام کے تحت بڑے پیمانے پر نئے امید واروں کو کاروبار، کم لاگت رہائش اور زرعی قرضے فراہم کیے جائیں گے جو نہ صرف روزگار کے مواقع فراہم کریں گے، بلکہ معاشی سرگرمیوں کو بڑھانے کے ساتھ ساتھ غربت کے خاتمے، جی ڈی پی گروتھ اور لوگوں کو بنکاری کے دھارے میں شامل کرنے میں معاون ثابت ہونگے۔اس موقع پر وزیرِ اعظم نے کہا کہ پاکستان میں پہلی دفعہ معاشی طور پر کمزور طبقے کو غربت سے نکالنے کیلئے جامع حکمت عملی مرتب کی گئی ہے. ہمسایہ ملک چین اور بھارت کی مثال سامنے ہے، چین نے پچھلے تیس سال میں لاکھوں لوگوں کو ایسے اقدامات کے تحت غربت سے نکالا جبکہ بھارت اس میں ناکام رہا. حکومت کی اولین ترجیح نچلے طبقے کے لوگوں کی مالی مدد کے ساتھ ساتھ ایسے اقدامات سے انہیں روزگار میں خود کفیل بنانا ہے۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*